پیٹرول کی قیمتوں میں اضافے کے ساتھ ہی پٹرول پمپس بند کر دیے گئے، عوام کو شدید مشکلات کا سامنا

کو ئٹہ (قدرت روزنامہ)وفاقی حکومت کی جانب سے پیٹرول کی قیمتوں میں اضافے کے ساتھ ہی صوبائی دارالحکومت کوئٹہ پیٹرول پمپس بند کردئیے گئے جس کی وجہ سے لوگوں کو پیٹرول کے حصول میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز وزیراعظم عمران خان نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمت میں اضافے کی سمری منظور کرلی جس کے بعد وزارت خزانہ نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا نوٹیفکیشن جاری کردیا وزارت خزانہ کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق پیٹرول 25 روپے 58 پیسے فی لیٹر مہنگا کر دیا گیا ہے

جس کے بعد پیٹرول کی نئی قیمت 100روپے 10پیسے فی لیٹر مقرر کی گئی ہے ڈیزل کی قیمت 21 روپے31 پیسے فی لیٹر اضافے کے بعد 101روپے46 پیسے، مٹی کے تیل کی قیمت میں 23 روپے50 پیسے فی لیٹر اضافے کے بعد نئی قیمت 59روپے 6 پیسے مقرر کی گئی ہے عامر پر پٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتوں کا نفاذ ہر ماہ کی پہلی تاریخ سے ہوتا ہے تاہم نئی قیمتوں کا اطلاق آج رات 12 بجے سے ہی ہوجائے گا پیٹرول کی قیمتوں میں اضافے کے ساتھ ہی صوبائی دارالحکومت کوئٹہ میں پیٹرول پمپس بند کردئیے گئے جس کی وجہ سے لوگوں کو پیٹرول کے حصول میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا عوامی حلقوں کی جانب سے پیٹرول پمپس کی بندش کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے

کہ پیٹرول کی نئی قیمتوں کا اطلاق رات 12 بجے ہوتا ہے لیکن پیٹرول بہت پہلے نایاب ہوگئے خیال رہے کہ کورونا وائرس کی وجہ سے عالمی منڈی میں تیل کی کھپت کم ہونے سے قیمتیں تاریخ کی کم تریں سطح پر پہنچ گئی تھیں جس کے بعد پاکستان میں بھی پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں بڑی کمی کی گئی تھی .

.


.


Top