2014ء کا دھرنا!!! پاکستان تحریک انصاف کی پُشت بناہی میں چوہدری نثار کا ہاتھ ۔۔۔ نامور (ن) لیگی رہنما نے چکری کے چوہدری کو عمران خان کا سہولت کار قرار دیدیا

اسلام آباد (قدرت روزنامہ) پاکستان مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما اور قومی اسمبلی کے رکن جاوید لطیف نے کہا ہے کہ چوہدری نثار علی خان 2014ء کے تحریک انصاف کے دھرنے کا سہولت کار تھے . تفصیلات کے مطابق آج جاوید لطیف نے نجی ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا ہے کہ وزیراعظم ہاؤس پر حملہ، ریڈ زون میں دھرنے کے شرکاء کو داخلے کی اجازت اور پتا نہیں کس کس کی فون کال ریسو کرنا، اس سارے معاملے میں اس وقت کے وزیرداخلہ سہولت کار بنے ہوئے تھے .

انہوں نے ایک سوال کے جواب میں استفسار کرتے ہوئے کہا کہ کیا دھرنے کے دنوں میں تھانے سے ملزمان میں نے چھڑوائے تھے یا عمران خان نے چھڑوائے تھے؟ اس دوران جب میزبان نےسوال کیا کہ اس وقت حکومت کس کی تھی؟ وزیر داخلہ کس کا تھا؟ تھانے سے ملزمان چھڑانے والے کو کیوں نہیں پکڑا؟ تو جاوید لطیف نے جواب دیا کہ حکومت نواز شریف کی تھی اور وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان تھے، ملزمان چھڑانے والے کو کیوں نہیں پکڑا پر میں عرض کروں گا، جس کی آپ مجھے اجازت دیں. جاوید لطیف نے مزید کہا کہ دھرنے کے دوران پی ٹی وی پر حملہ ہوا، وزیراعظم ہاؤس پر حملہ ہوا، اس دوران ریڈ زون میں دھرنے کے شرکاء کو داخلے کی اجازت دینا اور پتا نہیں

کس کس کی فون کال ریسو کرنا، اس سارے معاملے میں کون سہولت کار بنا ہوا تھا. جاوید لطیف نے یہ بھی کہا کہ آج وہ وزیرداخلہ کہاں ہیں؟ جس پر پروگرام کے میزبان نے کہا کہ آپ کہہ رہے ہیں کہ ن لیگ کا وزیرداخلہ تحریک انصاف کا سہولت کار تھا؟ جس پر ن لیگی رہنما نے کہا کہ ہاں میں کہہ رہا. دوسری جانب نوازشریف کے بیرون ملک علاج کے سلسلے میں جانے پر بات کرتے ہوئے اپوزیشن لیڈر شہبازشریف کا ایک نجی ٹی وی چینل پر بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اگر اگرثابت ہو جائے نواز شریف ایک دھیلا بھی دے کر باہر گئے تو سیاست چھوڑ دوں گا. ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے نوازشریف کی طبیعت کے حوالے سے کوئی سیاست نہیں کی اور نہ ہی ہمیں کرنی چاہیئے، ان کے پلیٹ لیٹس کی صورتحال سنگین تھی. میں نے اپنے بھائی کے لئے نہیں، ان کے علاج کے لئے گیا تھا. جب مجھے واپسی آنا پڑا تو مجھے ان کا علاج چھوڑ کر آنا پڑا.

..


Top