سعودی عرب میں پھنسے پاکستانیوں کو واپس لانے کیلئے اضافی فلائٹس چلائی جائیں گی

(قدرت روزنامہ)وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے سمندر پار پاکستانی سید زلفی بخاری نے سعودی عرب میں پھنسے پاکستانیوں کو وطن واپس لانے کے لیے آئندہ ہفتے سے اضافی فلائٹس چلانے کا عندیہ دیا ہے . سعودی عرب میں پاکستانی برادری سے ٹیلی کانفرنس کے ذریعے خطاب کرتے ہوئے زلفی بخاری نے کہا کہ پاکستان اس وقت سعودی عرب سے پاکستانیوں کو واپس لانے کے لیے ہر ہفتے دو فلائٹس چلا رہا ہے اور آئندہ مرحلے میں اس میں اضافہ کیا جا سکتا ہے .

انہوں نے مزید کہا کہ آئندہ آنے والے ہفتوں میں ان فلائٹس کی تعداد تین سے پانچ تک کرنے کے لیے اپنی تمام تر کوششیں کر رہا ہوں اور بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو یقین دہانی کرائی کہ حکومت نے کورونا وائرس کی وبا کے دوران اپنے شہریوں کو مستقل بنیادوں پر وطن واپس لانے کا فیصلہ کیا ہے. ایپل اور گوگل نے کورونا وائرس کے پھیلاؤ میں کمی کے لیے ٹیکنالوجی پر مبنی ایپ متعارف کرانے کا عندیہ دے دیا. مذکورہ ایپ کے ذریعے کوئی متاثرہ شخص اور قرنطینہ سے متعلق امور کی معلومات بروقت دستیاب ہوگی. صحت کے ماہرین کا کہنا کہ لاک ڈاؤن کے خاتمے کے بعد اس طرح کی ایپ سے متاثرہ شخص کا سراغ لگانا وائرس کے عدم پھیلاؤمیں مدد کرے گا. متحدہ عرب امارات کے شہر دبئی کے حکام کا کہنا ہے کہ رواں سال جولائی تک شہر کو سیاحوں کے لیے کھولنے کا فیصلہ کیا جاسکتا ہے. گلف نیوز کی رپورٹ کے مطابق دبئی کے محکمہ سیاحت اور تجارت کی مارکیٹنگ کے ڈائریکٹر جنرل ہلال المری نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ پوری دنیا میں لگی پابندی کے باعث امکان ہے کہ اس فیصلے میں ستمبر تک تاخیر ہو. انہوں نے مزید کہا کہ یہ فیصلہ دیگر ممالک کی صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے لیا جائے گا. یاد رہے کہ کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے احتیاطی اقدام کے طور پر سیاحتی ویزا 17 مارچ سے معطل کردیا گیا ہے وزیر اطلاعات و بلدیات سندھ سید ناصر حسین شاہ نے صوبے میں لاک ڈاؤن ختم ہونے سے متعلق خبروں کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ کل کوئی لاک ڈاؤن ختم ہونے کا فیصلہ نہیں ہوا ہے. اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ آج لاک ڈان نرم کرنے کے حوالے سے مشاورت ضرورت ہوئی تھی، حکومت چاہتی ہے کہ کاروباری سرگرمیوں کے ایس او پیز کی بنیاد پر رعایت دی جائے. ناصر حسین شاہ نے کہا کہ اس پر مشاورت جاری ہے، جب مکمل ہوجائے گی تو عوام کو آگاہ کیا جائے گا. ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ پہلے عوام کی صحت کو محفوظ کرنے کے لیے اقدامات اٹھائیں گے، اس کے بعد ہی کاروباری سرگرمیاں ایس او پیز کے تحت شروع کرنے کی اجازت دی جائے گی، ابھی آن لائن کاروبار جاری ہے.

..


Top