”نافرمان بیوی کو ہر روز مارنا پیٹنا بالکل جائز عمل ہے“

ریاض(قدرت روزنامہ)سعودی عرب کے مشہور نوجوان شاعر احمد القحطانی جو کہ بفن کے نام سے مشہور ہیں، ان کی ایک انتہائی قابل اعتراض ویڈیو وائرل ہوئی ہے جس میں وہ لوگوں کو یہ گھناؤنا پرچار کرتے دکھائی دیتے ہیں کہ مردوں کا اپنی بیوی کی مار پیٹ کرنا اور انہیں طلاق دے دینا بالکل مناسب عمل ہے . سعودی اخبار المرصد کے مطابق سعودی شاعر بفن نے اپنے سنیپ چیٹ اکاؤنٹ پر چند ویڈیوز پوسٹ کی ہیں .

ایک ویڈیو میں بفن کہتا ہے کہ جو بیوی اپنے خاوند کا کہنا نہیں مانتی، اسے ہر روز مارنا پیٹنا چاہیے، حتیٰ کہ طلاق بھی دے دی جائے تو کوئی بُری بات نہیں. جب کہ ایک اور ویڈیو میں بفن نے اپنے فالوورز کو مخاطب کرتے ہوئے کہا” مرد ہر روز سخت اور تپتی ہوئی گرمی جھیل کر اپنے کام سے تھکا ہارا گھر واپس آتا ہے، تو آگے سے اس کی پھُولے ہوئے پیٹ والی موٹی تازی بیوی اس کا ایک ریسلر کی طرح ہاتھوں میں چھُری یا ڈوئی پکڑ کر جارحانہ انداز میں استقبال کرتی ہے. حالانکہ اسے اپنے خاوند کا ایک شہزادے کی طرح استقبال کرنا چاہیے.“ بفن نے اپنی اس ویڈیو میں مردوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا” تم سب کا کام ہے کہ آج کے روز اپنی بیویوں پر خوب تشدد کرو، یاد رکھو ان کی مار پیٹ کیے بغیر آج بالکل نہیں سونا ہے. اگر ان کی پٹائی کا کوئی بہانہ نہیں ِمِل رہا تو دو تین مہینے پُرانی کوئی بات یا غلطی ذہن میں لا کر ان کی پٹائی کیا کرو. بفن کی جانب سے بیویوں کو تشدد پر اُبھارنے والی ان ویڈیوز کے پوسٹ کیے جانے کی دیر تھی کہ سوشل میڈیا پر اس کے خلاف #Buffon_saudi کے نام سے ہیش ٹیگ بن گیا. سب سے پہلے معروف سعودی مصنف ابراہیم المنیف نے بفن کی ویڈیو کو شیئر کرتے ہوئے سعودی حکام سے بفن کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کیا. ابراہیم المنیف نے اپنے ٹویٹر میں لکھا کہ بفن اپنے فالوورز کو یہ شرمناک ترغیب دے رہا ہے کہ وہ اپنی بیویوں کو مار پیٹ کا نشانہ بنائیں. کیا یہ گھریلو تشدد پر اُبھارنے کا شرمناک معاملہ نہیں ہے. انہی غلط لوگوں کی وجہ سے معاشرے میں گھریلو تشدد کے واقعات میں اضافہ ہوتا ہے.سعودی عرب کے گھریلو تشدد کے انسداد کے ادارے کی جانب سے اس معاملے کا نوٹس لیا گیا ہے، امکان ہے کہ سعودی شاعر بفن کو اس کے انتہائی نازیبا کلمات اور گھریلو تشدد کی ترغیب دینے کے الزام میں گرفتار کر لیا جائے گا.

..


Top