CORONAVIRUS PAKISTAN CONFIRMED CASES

1566

  • Deaths 16
  • Sindh 502
  • Punjab 570
  • Balochistan 141
  • KP 192
  • Islamabad 43
  • GB 116
  • AJK 2

 

 

 

 


خیبر پختونخوا میں کورونا وائرس سے متاثرہ 2 مریض صحتیاب

 

(قدرت روزنامہ)صوبہ خیبر پختونخوا میں کورونا وائرس سے متاثرہ دو مریض صحتیاب ہو گئے . خیبر پختونخوا کے مشیر اطلاعات اجمل وزیر نے تصدیق کی کہ اب کورونا کے دو مریض صحتیاب ہوچکے ہیں اور انہیں ہسپتال سے ڈسچارج کیا جا چکا ہے .

اجمل وزیر نے ڈان نیوز کو بتایا کہ بونیر کی ایک خاتون اور پشاور کے پولیس سروسز ہسپتال میں زیر علاج ضلع خیبر کے رہائشی صحتیاب ہو گئے. انہوں نے مزید کہا کہ مختلف ہسپتالوں میں رہائش پذیر دیگر مریضوں کا علاج جاری ہے اور امید ظاہر کی کہ وہ جلد صحتیاب ہو جائیں گے. ضلع خیبر کی تحصیل باڑہ کے علاقے شالوبار میں 29 سالہ عادل رحمٰن کورونا وائرس کے سبب 14دن قرنطینہ میں گزارنے کے بعد اب صحتیاب ہو گئے ہیں.عادل خیبر پختونخوا میں کورونا سے صحتیاب ہونے والے پہلے مریض ہیں اور انہیں بدھ کو پولیس سروس ہسپتال سے ڈسچارج کردیا گیا جہاں انہیں 14دن کے لیے قرنطینہ میں رکھا گیا تھا. عادل نے بتایا کہ مجھے اس بات کا علم نہیں کہ وائرس کیسے لگا، مجھے صرف بخار اور بدن میں شدید درد ہو رہا تھا. ان کا ابتدائی طور پر گھر میں علاج کیا گیا البتہ بگڑتی ہوئی صحت کے سبب انہیں علاج اور تشخیص کے لیے نجی ہسپتال میں داخل کرایا گیا. انہوں نے خود سے علاج کے باوجود صحتیاب نہ ہونے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کچھ دن بعد نجی ہسپتال والوں نے انہیں بلایا اور ایک ایمبولینس میں ڈال کر پولیس سروسز

ہسپتال منتقل کردیا.عادل نے بتایا کہ دوبارہ ٹیسٹ کرنے پر بھی کورونا کا ٹیسٹ مثبت آیا، یہ خبر مجھ پر کسی بم کی مانند گری اور مجھے لگنے لگا کہ اب شاید میں کبھی بھی نارمل زندگی کی طرف نہیں لوٹ سکوں گا. صحتیاب ہونے والے خوش نصیب مریض نے مزید بتایا کہ ابتدائی طور پر انہیں گلے میں سوزش اور سینے میں درد محسوس ہوا جس کے بعد سانس لینے میں دشواری ہونے لگی لیکن ڈاکٹروں نے بہت دیکھ بھال کی جس کی بدولت ہر گزرتے دن کے ساتھ اب کی حالت سنبھلنے لگی. انہوں نے بتایا کہ ہسپتال میں داخل ہونے کے 12ویں دن ڈاکٹرز نے بتایا کہ میرا کورونا کا ٹیسٹ منفی آیا ہے اور جب ڈاکٹرز نے مجھے بتایا کہ مجھے کورونا نہیں ہے تو میں آپ کو اپنے جذبات الفاظ میں بیان نہیں کر سکتا. عادل کا کہنا تھا کہ ڈرنے کی کوئی ضرورت نہیں اور کورونا سے لڑنے کے لیے سب سے اہم چیز یہ ہے کہ مکمل ہمت کے ساتھ اس سے مقابلہ کریں اور علاج اور قرنطینہ کے دوران مکمل قوت کے ساتھ کا مقابلہ کریں.

..


Top