مریم نواز اپنے چچا کے لیے وبالِ جان بن گئیں۔۔۔!!! وزارتِ عظمیٰ کی خاطر شہباز شریف کس کے پاس جا پہنچے؟ پوری (ن) لیگ پریشان

لاہور(قدرت روزنامہ)سینئر اینکر سعدیہ افضال کا ملکی سیاسی صورتحال پر تجزیہ پیش کرتے ہوئے کہنا تھا کہ شہباز شریف کی خواہش ہوسکتی ہے کہ کسی طریقے سے کوئی راستہ بن جائے کہ وہ تحریک عدم اعتماد لاسکیں لیکن شہباز شریف کے پاس صلاحیت نہیں ان کی تو اپنی پارٹی میں اختلافات ہیں . آرمی چیف کی مدت ملازمت کے قانون کی منظوری کے بعد ایک طرف مریم نواز خاموش ہیں .

دوسری طرف شہباز شریف اپنی پارٹی کے معاملات طے کرنے کے لیے اداروں میں پھر رہے ہیں.مریم نواز کے ہوتے ہوئے شہباز شریف کا لیڈر بننا یاوزارت عظمیٰ کا امیدورا ہونا سمجھ سے بالاتر ہے.سوال یہ بھی ہے کہ کیا پیپلز پارٹی ن لیگ پر اعتماد کر سکتی ہے.شہباز شریف جو رابطے کر رہے ہیں کہ کیا انہیں کہیں سے کوئی تسلی ملی ہے،اتحادی بھی بکھر رہے ہیں.ان کی تحریک میں اتنی جان نہیں کہ کامیاب ہو سکے.خیال رہے کہ مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کا نام بطور وزیراعظم کافی عرصے سے گونج رہا ہے.کہا جا رہا ہے کہ شہباز شریف خاص حلقوں کے فیورٹ ہوتے جا رہے ہیں.اسی متعلق جب شہباز شریف سے سوال کیا گیا تو انہوں نے دلچسپ جواب دیا.لندن میں جب ایک صحافی نے شہباز شریف سے سوال کیا کہ آپ کا نام بطور وزیراعظم آ رہا ہے

تو انہوں نے ہنستے ہوئے کہا کہ یہ کام بیس سال سے ہو رہا ہے.شہباز شریف سے مزید پوچھا گیا کہ کیا رواں سال الیکشن کا سال ہے؟ تو انہوں نے جواب دیا کہ ابھی آئیں ٹوئنٹی ٹوئنٹی میچ اکٹھے دیکھتے ہیں.قبل ازیں انہوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عدالتی فیصلے کی روشنی میں آرمی ایکٹ میں ترمیم کی حمایت کی، سپریم کورٹ نےہدایت کی تھی کہ حکومت آرمی ایکٹ میں قانون سازی کرے، ماضی میں حمایت کی اس طرح کی مثالیں موجود ہیں.انہوں نے پارک لین اپارٹمنٹس کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عوام کے اصل ایشوزسے پیچھے ہٹنا مناسب نہیں، اصل مسائل پاکستان کے عوام کی غربت ، بیروزگاری اور صحت کی فراہمی ہے. ہم نے بجلی کا بحران حل کرکے ملک کی خدمت کی ہے. ملک میں بجلی بحران تھا لیکن نوازشریف نے 4 سال میں بجلی بحران حل کرکے تاریخی کام کیا. آج بھی نوازشریف کے منصوبوں کو یاد کرتے ہیں.

..


Top