بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کی مد میں بیوائوں کے پیسے ہڑپنے والے افسران کیساتھ کیا کام کیا جائے گا

      اسلام آباد (قدرت روزنامہ) بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کی مد میں بیوائوں کے پیسے ہڑپنے والے افسران کیساتھ کیا کام کیا جائے گا، عمران خان جلال میں آگئے ، ہدایات جاری کر دی گئیں . .

.وزیراعظم کا بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے فائدہ اٹھانے والے افسروں کے نام منظر عام پر لانے کا فیصلہ. تفصیلات کے مطابق بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے فائدہ اٹھانے والے سرکاریا فسروں کی رپورٹ وزیراعظم عمران خان کو پیش کی گئی جس کے بعد عمران خان نے بے ظابطگیوں میں افسروں کے ملوث ہونے پر اظہار برہمی کیا. وزیراعظم نے ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا کہ لوٹ مار کرنے والوں کے نام قوم کے سامنے لائے جائیں . عمران خان نے اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ غریبوں کا پیسہ لوٹنے والوں کو چھوٹ نہیں دے سکتے .وزیراعظم کے اس فیصلے پر تبصرہ کرتے ہوئے اینکر پرسن منصور علی شاہ نے کہا کہ وزیراعظم کا ایک اچھا اقدام ہے. بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کے فنڈز لینے والے سرکاری افسروں کے نام سامنے آنے چاہیں. واضح رہے ا س سے قبل اینکر پرسن اسامہ غازی نے کہا کہ وزیراعظم کی معاون خصوصی ثانیہ نشتر نے بتایا ہے کہ وہ خود برقعہ پہن کر بے نظیر انکم سپورٹ مراکز پر گئی .

جہاں معاون خصوصی نے دیکھا عورتین گاڑی سے اتر کر بے نظیر انکم سپورٹ کے پیسے وصول کر رہی تھی ساتھ ہی ساتھ کئی خواتین نے سونے کی چوڑیاں بھی پہنچ رکھی تھیں. اسامہ غازی نے کہا کہ یہ وہ وجہ تھی جس کےباعث 8 لاکھ سے زائد افراد کو اس سکیم سے نکال دیا گیا. ان کا کہنا تھا کہ اس کرپشن کو پکڑنے سے پاکستان کے قومی خزانے کو 14 ارب روپے کی بچ ہوگی. اسامہ غازی نے کہا جن 8 لاکھ افراد کو بے نظیر انکم سپورٹ سے نکالا گیا ہے اس میں سے ایک لاکھ 53 ہزار لوگ وہ تھے جنہوں نے بیرون ملک ایک بار سفر کیا. ایک لاکھ 95 ہزار افراد ایسے تھے جن کے شوہر ایک بار بیرون ملک سفر کر چکے ہیں . اور بہت سے سرکاری افسر بھی بے نظیر انکم سپورٹ کے فنڈ لیتے رہے.

..


Top