مصر: بچوں کو مارنے اور آشنا سے شادی کی خاطر سفاک ماں کی انتہائی انوکھی واردات

قاہرہ(قدرت روزنامہ)ماں اپنے بچوں کی لیے گھنی چھاؤں کی طرح ہوتی ہے، اُن پر آنے والی ہلکی سی تکلیف اور مصیبت پر بھی تڑپ کر رہ جاتی ہے اور اُس وقت تک چین سے نہیں بیٹھتی، جب تک بچے دوبارہ سے خوش ، صحت مند اور تکلیف سے آزاد نہ دکھائی دینے لگیں . تاہم اس دُنیا میں ایسی ڈائن صفت مائیں بھی ہیں جو اپنی جنسی ہوس اور ذاتی فوائد کی خاطر اپنے ہی بچوں کو نگل جاتی ہیں .


ضرور پڑھیں: بیوی نے آشنا سے بات کرنے سے منع کرنے پر شوہر کو قتل کر دیا

ایسا ہی ایک واقعہ مصر میں بھی پیش آیا. جہاں 24 سالہ خاتون نے انتہائی خوفناک منصوبہ بندی سے اپنے دونوں بچوں کو وقفوں وقفوں سے صرف اسی لیے مار ڈالا کہ وہ اپنے خاوند سے خُلع کا مطالبہ کر سکے اورباقی کی زندگی اپنے آشنا کے ساتھ گزار سکے. العربیہ ڈاٹ نیٹ کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ مصر کے علاقے الدقھلیہ گورنری میں ایک ایسا انوکھا اور شرمناک واقعہ پیش آیا جس نے سُننے والوں کو خون کے آنسو رُلا دیا ہے. تفصیلات کے مطابق مصری لڑکی لمیا کی چھ سال قبل عبدالعزیز رافت نامی نوجوان سے شادی ہوئی. دونوں کے ہاں ایک بیٹے اور ایک بیٹی نے جنم لیا. بیٹے جمال کی عمر 5 سال تھی جبکہ ننھی ریماس 3 سال کی تھی. چند روز قبل اچانک ریماس کی حالت بگڑ گئی اور وہ چند گھنٹوں میں ہی اللہ کو پیاری ہو گئی. بچی کی موت پر اس کی ماں لمیا نے خوب رونا پیٹنا کیا، جسے دیکھ کر ہر دِل صدمے سے دہل اُٹھا. ابھی بچی کی موت کو ایک ماہ بھی نہ ہو پایا تھا کہ اُن کا پانچ سالہ بیٹا جمال بھی یکایک طبیعت شدید بگڑ جانے کے باعث اللہ کو پیارا ہو گیا جسے اپنی چھوٹی بہن کے پہلو میں سپُردِ خاک کر دیا گیا. دونوں بچوں کی موت پر والد صدمے سے بُری طرح بے حال ہو گیا. جبکہ بچوں کی ماں پر بھی غشی کے دورے پڑتے رہے. سب لوگوں نے اسے اللہ کی رضا جان کر لمیا ء اور اس کے خاوند کو بہت حوصلہ دِیا. ابھی بیٹے کو ایک ہفتہ ہی گزرا تھا کہ لمیاء نے اپنے خاوند عبدالعزیز رافت سے خلع کا مطالبہ کر ڈالا. عبدالعزیز اپنی بیوی کی جانب سے اس اچانک مطالبے پر پریشان ہو گیا کہ ابھی تو وہ دونوں سوگ کی حالت میں ہیں اور ایک دم سے بیوی کے دماغ میں نجانے کیا سما گئی. خاوند نے اپنی بیوی کو منانے کی بہت کوشش کی اور وجہ بھی دریافت کی،

مگر اس نے کوئی جواب نہ دِیا. اس بات کو ایک دو روز ہی گزرے تھے جب عبدالعزیز کو اپنے گھر میں ایک دوائی نظر آئی جو کہ دِل کے مریضوں کے استعمال میں آتی ہے. وہ حیران ہوا کہ جب اُس کی بیوی دِل کے روگ کا شکار نہیں ہے تو پھر یہ دوائی گھر میں کیوں موجود ہے؟ اُس نے دوائی میڈیکل سٹور لے جا کر تصدیق کروائی کہ یہ دوائی واقعی دِل کے مرض کی ہے اور بڑی عمر کے افراد کے استعمال میں آتی ہے. عبدالعزیز کو یونہی شک گزرا اُس نے فوری طور پر پولیس سے رابطہ کر کے بچوں کی اچانک اموات اور امراضِ قلب کی دوائی کے بارے میں آگاہ کر کے تفتیش کی درخواست کی. پولیس نے خاتون کو تفتیش کے لیے تھانے بُلایا تو پہلے وہ بہانے بازی کرتی رہی. تاہم سختی سے پوچھا گیا تو مکار اور سفاک خاتون نے ساری بات اُگل دی. خاتون نے بتایا کہ اُس کا ایک شخص سے معاشقہ چل رہا تھا، وہ اپنے خاوند اور بچوں سے چھُٹکارا حاصل کر کے اپنے آشنا سے شادی کرنا چاہتی تھی. اس مقصد کے لیے اُس نے خاوند اور اپنے گھر والوں سے کہا کہ وہ خُلع لینا چاہتی ہے، مگر اُس کا خاوند اس بات پر راضی نہیں ہوا تو اس نے آشنا کی محبت میں پاگل ہو کر ایک خطرناک منصوبہ بنایا. ممتا کے ماتھے پر کلنک کی حیثیت رکھنے والی اس ماں نے ایک اسپتال کی فارمیسی سے دِل کی دوائی لی اور اپنی تین سالہ بچی کو پِلا دی، جس کے نتیجے میں اُس کے خون کی گردش خوفناک حد تک تیز ہو گئی اور وہ موت کے منہ میں چلی گئی. یہی کام اس نے ایک ماہ بعد اپنے پانچ سالہ بچے کے ساتھ بھی کیا. کسی کو بھی اس پر شُبہ نہ ہو سکا. تاہم اللہ کو کچھ اور ہی منظور تھا. خاوند کی جانب سے دوائی پکڑے جانے کے بعد اس شیطان صفت ماں کا بھیانک چہرہ پُوری دُنیا کے سامنے آ گیا. خاتون کو گرفتار کرنے کے بعد اس کے خلاف مقدمہ چلایا جا رہا ہے، جس میں اُسے عدالت کی جانب سے سخت سے سخت سزا دیئے جانے کا امکان ہے.

..

ضرور پڑھیں: کہتے ہیں کسی گاﺅں کی ایک عورت اپنے آشنا کے ساتھ بھاگ گئی، کئی دن بعد جب واپس آئی تو ماں سے کہنے لگی، آٹا مجھے دو، آج میں روٹیاں تندور سے لگوا کے لاتی ہوں، ماں نے روکا تو بولی۔۔۔ ایک معنی خیز تحریر ملاحظہ کریں


Top