اچھا تو یہ بات تھی۔۔۔!!! پی آئی اے کی فلائٹ پی کے 250 کو کابل ائیر پورٹ پر کیوں روکے رکھا گیا؟ نئی کہانی سامنے آگئی

کراچی (قدرت روزنامہ) ترجمان پی آئی اے نے اپنے اعلامیہ میں کہا ہے کہ کابل سے اسلام آباد کی پرواز پی کے 250 کابل ائر پورٹ کے رن وے کی مرمت کی وجہ سی تاخیر کا شکار ہوئی . مرمتی رکاوٹ کے باعث مکمل رن وے کی سہولت میسر نہیں تھی .

ضرور پڑھیں: پاکستانی خواتین کی مہارتوں سے تو آپ واقف ہونگے ، مگر ایک امریکی خاتون نے چار روز تک اسلام آباد ائیر پورٹ والوں کو کیسے ماموں بنائے رکھا ؟ حیران کن خبر

ائر ٹریفک کنٹرولر کی اجازت کے بعد پرواز نے رن وے کے دوسرے حصے سے ٹیک آف کیا.بعد ازاں پرواز 162 مسافروں کو لے کر اسلام آباد کے لئے روانہ ہو گئی. ترجمان پی آئی اے کے مطابق کابل ایرپورٹ انتظا میہ نے 15 مسافروں کو پرواز سے اتارنے کے لئے کہا جس پر پی آئی اے کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا کہ مسافروں کو غیر ملک میں نہیں چھوڑ کے آسکتی. اور سارے مسافر جہاز پہ موجود ہیں.افغان انتظامیہ نے موقف مان کر اجازت دے دی. کابل میں پاکستانی سفارت خانے نے بھی پرواز کی روانگی میں کلیدی کردار ادا کیا. پرواز 3.20 مقامی وقت کے مطابق اسلام آباد لینڈ کر گئی. اس سے قبل خبر آئی تھی کہ کابل میں پھنسے پی آئی اے طیارے کو اڑان کی اجازت مل گئی. پاکستان نے معاملہ سفارتی چینل پر اٹھا کر حل کرایا. تفصیلات کے مطابق کابل میں روکے گئے پی آئی اے کے طیارے کو اڑان کی اجاز ت مل گئی. افغان حکام نے پی آئی اے طیارے کو چھوٹا رن وی استعمال کرنے سے روک دیا تھا. مگر دیگر طیارے معمول کے مطابق اپنی اڑان بھر رہے تھے.پاکستانی سفارتخانے نے جہاز کو روکنے جانے پر معاملے کا نوٹس لیا اور معاملے کو سفارتی طور پرحل کیا.افغان حکام نے پی آئی اے کے طیارے کو کابل ائیرپورٹ اڑان بھرنے سے روک دیا تھا .

افغان حکام نے ایک بار پھر پاکستان دشمنی کا مظاہر کر دیا.میڈیا رپورٹس کے مطابق افغانستان نے اسلام آباد سے آج صبح کابل پہنچنے والی پرواز کو دوبارہ اڑان کی اجازت دینے سے انکار کر دیا تھا . کابل سے اسلام آباد واپسی کے لیے 162مسافر سوار تھے.ذرائع کے مطابق افغان حکام جہاز سے مسافروں کو اترنے بھی نہیں دے رہے.پی آئی اے کے اے 3ٹوئنٹی طیارے کو چھوٹا رن وے استعمال کرنے کی ہدایت کی گئی ہے تھی .ذرائع کا کہنا ہے کہ کابل ائیرپورٹ کے بڑے رن وے پر بڑے طیارے معمول کے مطابق اڑان بھر رہے ہیں.تاہم معاملے کو سفارتی سطح پر اٹھانے سے پی آئی اے کے طیارے کو اڑان کی اجازت مل گئی ہے.یاد رہے اس سے قبل بھی پاکستان اور افغانستان کے درمیاں معاملات تنازعات کا شکار رہے ہیں جس سے افغانستان کے پاکستان دشمنی عزائم کا حصہ ہے. تاہم پاکستان افغانستان میں امن کا خواہ ہے، اور طالبات اور امریکا کے درمیان مذاکرات کیلئے اہم کردار ادا کررہا ہے. جس کو افغانستا اور امریکا کئی بار تسلیم کر چکا ہے. مگر پی آئی اے طیارے کا کابل میں روکا جانا تعلقات کو سفارتی خراب کرسکتا ہے.

..

ضرور پڑھیں: ’’ ایسا لگ رہا ہے جیسے ورلڈ کپ جیت کر آرہا ہوں۔۔۔‘‘ امریکہ واپسی پر پرتپاک استقبال ، ائیر پورٹ پر شاندار بات کہہ دی


Top