عارف علوی اور انکے خاندان کے درمیان 1810 ایکڑزمین کی ملکیت کا تنازع۔۔۔بھانجے عظمت ریحان کے سنگین الزامات نے صدر پاکستان کو کہیں کا نہ چھوڑا

کراچی (قدرت روزنامہ) صدر پاکستان عارف علوی اور علوی خاندان کے درمیان 1810 ایکڑزمین کی ملکیت کا تنازع,سندھ ہائیکورٹ کے آفیشل اسائینی نے بھی علوی خاندان کو مبینہ طور پر 59 لاکھ روپے کا چونا لگا دیا . سندھ ہائیکورٹ کے آفیشل اسائینی کے خلاف صدر پاکستان کے بھانجے عظمت ریحان نے عدالت سے رجوع کرلیا,درخواست گزار کا کہنا ہے کہ آفیشل اسائینی ڈاکٹر چوہدری وسیم اقبال نے حبیب اوشین انڈسٹری کے ملازمین کے نام پر 59،81،049 روپے جعل سازی سے ہڑپ کرلیے، علوی خاندان کی متنازعہ زمین پر صرف تین ملازمین کام کرتے ہیں،آفیشل اسائینی نے 13 ملازمین کے نام پرنام پر رقم نکلوا لی،ماڑی پور پر واقع 1810 ایکڑزمین خاندانی تنازعہ کے باعث ہائیکورٹ کے آفیشل اسائینی کی نگرانی میں ہے،علوی خاندان کی زمین پر حبیب اوشین انڈسٹری سالٹ ورکس کے نام پر نمک بنایا جاتا ہے،مبینہ طور پر خاندان سے جعلی کرکے عارف علوی نے زمین اپنے نام کرالی تھی،زمین کی منتقلی کو عارف علوی کے بھانجے عظمت ریحان نے ہائیکورٹ میں چیلنج کررکھا ہے .

جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے کہاہے کہ قوم کوعظیم بننے کے لئے کرپشن کے خلاف جہاد میں شریک ہونا ہوگا ، کرپشن کے خلاف موبائل ایپ میں ہر کوئی شرکت کرسکتاہے جب ہمارے نوجوانوں میں سمجھ آگئی کہ ہم انسداد کرپشن مہم میں شرکت کرکے ملک کی خدمت کررہے ہیں تو نیا پاکستان بن جائے گا .اسلام آباد میں انسداد بدعنوانی کے عالمی دن کے موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستان میں لوگوں کوپتہ ہی نہیں ہے کہ کرپشن کا اور ان کاکیا تعلق ہے ؟ ملک کا پیسہ جب چوری ہوتاہے تو اس کا نقصان پورے ملک کوہوتاہے . انہوں نے کہا کہ بدعنوانی سے متعلق ایب لانچ کرکے بڑی خوشی ہوئی ہے. چائنہ کی معیشت بڑی تیزی سے آگے بڑھ رہی ہے . چینی صدر کی مقبولیت کا راز یہ ہے کہ چین میں چارسو کے قریب وزیر کی سطح کے لوگوں کوجیل میں ڈالا گیاہے . انہوں نے کہا کہ اس وقت بیروت، چلی اور عراق میں لوگ کرپشن کے خلاف باہرنکلے ہوئے ہیں. عوام کو اب آہستہ آہستہ احساس ہوگیاہے کہ کرپشن سے ان کا ملک آگے نہیں نکل سکتا ، جس قوم میں کرپشن نہیں ہے ، وہ اوپر ہے اوروسائل کے باوجود جس ملک میں کرپشن ہے ، وہ نیچے ہے .انہوں نے کہا کہ جب ایک معاشرے میں کرپشن بڑھ جاتی ہے تو جو پیسہ عوام پر خرچ ہونا ہوتاہے وہ جیبوں میں چلاجاتا ہے ، کرپٹ لوگ حکومت میں آکر پیسہ بناتے ہیں ، ان کوڈر ہوتاہے کہ پیسہ بینک میں رکھیں گے تو لوگوں کوپتہ چل جائے گا ، وہ پیسہ ملک سے باہر بھجوادیتے ہیں . اس سے ملک کودگنا نقصان ہوتاہے کیونکہ وہ منی لانڈرنگ کے ذریعے پیسہ باہر بھجواتے ہیں. انہوں نے کہا کہ پیسہ باہر بھجوانے سے ڈالر مہنگا ہوتاہے جس سے ہر چیز جو در آمد کرتے ہیں ، وہ مہنگی ہوجاتی ہے .وزیر اعظم کا کہناتھاکہ کرپٹ معاشروں میں سرمایہ کاری نہیں آتی ، ہمارا سب سے بڑااثاثہ بیرون ملک پاکستانی ہیں، اگر یہ پاکستانی اپنا پیسہ ملک میں لگانا شروع کردیں تو ملکی معیشت بہت مضبوط ہوجائےگی . انہوں نے کہا کہ بیرون ملک مقیم پاکستانی اپنا پیسہ اس لئے ملک میں نہیں لاتے کہ وہ کہتے ہیں کہ یہاں کرپشن ہے . انہوں نے کہا کہ ملتان میں میٹرو کی ضرورت نہیں تھی لیکن بنادی اوراب وہ اربوں روپے کانقصان کررہی ہے، خالی چل رہی ہے .

..


Top