خاتون کو غیر معیاری چیز بھیجنے پر daraz.pk کو 65 ہزار جرمانہ، آپ بھی آن لائن دھوکے سے چیزیں بیچنے والوں کے خلاف کیا ایکشن لے سکتے ہیں ؟ جانئے

کراچی(قدرت روزنامہ)شہر قائد کی عدالت میں ایک خاتون نے آن لائن خریدو فروخت کے ادارے کے خلاف کیس جیت لیا . دانیا کاشف نے سندھ کنزیومر پروٹیکشن ایکٹ 2014 کے تحت daraz.pk کے خلاف شکایت درج کرائی تھی جس میں اس نے موقف اپنایا تھا کہ اس نے آن لائن ویب سائٹ سے 7 ہزار 795 روپے میں Play-Doh DohVinci خریدا تھا جو اسے نومبر میں پہنچایا گیا .


ضرور پڑھیں: قربانی کے جانوروں کی آن لائن خرید و فروخت کیلئے آن لائن موبائل ایپ متعارف

جب اس نے پارسل کو کھولا تو اس کے اندر موجود پراڈکٹ خشک ہوئی پڑی تھی.

خاتون نے یہ بھی بتایا کہ پراڈکٹ کے ڈبے پر قیمت 6 ہزار 730 روپے درج تھی لیکن اسے یہ 7 ہزار 795 روپے میں بیچی گئی. خاتون کی درخواست پر Daraz.pk نے موقف اپنایا کہ درخواست گزار نے 30 یوم کا مقررہ وقت گزرنے کے بعد شکایت کی ہے، ویسے بھی اس نے پراڈکٹ شرائط و ضوابط پر ضامندی کے اظہار کے بعد خریدی تھی اس لیے اس کا کیس بے بنیاد ہے.

فریقین کے دلائل سننے کے بعد کنزیومر کورٹ کے جج مکیش کمار تلریجا نے حکم دیا کہ Daraz.pk شکایت کنندہ کو ہرجانے کی صورت میں 50 ہزار روپے ادا کرے اور 15 ہزار روپے کا جرمانہ قومی خزانے میں جمع کرائے.عدالت نے یہ بھی حکم دیا ہے کہ خاتون کو پراڈکٹ کا متبادل یا اس کی رقم واپس کی جائے . Daraz.pk کو کہاگیا ہے کہ وہ اپنی سروسز میں بہتری لائے اور گاہکوں کی توقعات کو پورا کرے.

..

ضرور پڑھیں: جامعہ کراچی میں طلبہ کے امتحانات آن لائن ہونگے، پالیسی تیار


Top