single photo

جب تک آئین کی بالادستی تسلیم نہیں کی جاتی ہم بھی کسی کی بالادستی کو تسلیم نہیں کرینگے‘ سب سے بڑی کرپشن ان اداروں نے کی ہے جنہوں نے یہاں منتخب حکومت کو گرا کر ایسے لوگوں پر مشتمل حکومت بنا یا جو آج بھی اقتدار پر براجماں ہے‘محمود خان اچکزئی

کوئٹہ(قدرت روزنامہ)پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان ا چکزئی نے کہا ہے کہ جب تک ملک میں آئین کی بالادستی تسلیم نہیں کی جاتی تو پشتونخوا ملی عوامی پارٹی بھی کسی کی بالادستی کو تسلیم نہیں کرینگے آئین میں واضح ہے کہ تمام ادارے پارلیمنٹ کے ماتحت ہیں مقتدر ادارے جتنے بھی طاقتور ہوجائیں انہیں پھر سیاست میں مداخلت نہیں کرنی چاہیے چین امریکا سمیت دنیا بھر سے کہتے ہیں چور حکومت کے ساتھ معاہدے تسلیم نہیں کریں گے جسے ہمارا تیل، سونا، تانبا و دیگر وسائل درکار ہیں وہ آکر ہم سے براہ راست معاہدہ کریںمولانا فضل الرحمان حکم دے تو صوبے میں جام کی حکومت کوایک ماہ میں ختم کرینگے

جام کمال شریف آدمی ہے پرہیز گار بھی ہے لیکن ان سے پوچھا جائے کہ آپ کی حکومت عوام کی حکومت ہے یا زر وزور کے نام پر اقتدار دیا گیا ہے ملک میں سب سے بڑی کرپشن ہمارے ان اداروں نے کی ہے جنہوں نے یہاں منتخب حکومت کو گرا کر ایسے لوگوں پر مشتمل حکومت بنا یا جو آج بھی اقتدار پر براجماں ہے ان خیالات کااظہارانہوں نے خان شہید عبدالصمد خان اچکزئی کی 46ویں برسی کے موقع پر ہاکی گرائونڈ میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر جمعیت علماء اسلام کے مرکزی امیر مولانا فضل الرحمان ،مولانا عبدالغفور حیدری،عثمان کاکڑ،نواب ایاز خان جوگیزئی،مولانا عبدالواسع، سردار مصطفیٰ خان ترین ودیگر نے بھی خطاب کا محمود خان اچکزئی نے کہا کہ پشتونوں کے خلاف سازشوں کا سلسلہ جاری ہے یہاں پر 40سال سے جو خون ریزی کی گئی تاریخ گواہ ہے کہ تاریخ میں اتنے قتل عام نہیں ہوئے جتنے پشتونوں کے قتل عام ہوئے ہیں

دنیا جہاں کے لوگوں نے جہاد کے نام پر جنگ میں حصہ لیا اور یہاں کے وسائل کو لوٹنے کی کوشش کی مگر تمام تر حالات کے باوجود ان کو ناکامی کاسامنا کرنا پڑا محمود خان اچکزئی نے کہا کہ پاکستان معدنی وسائل سے مالا مال ہے، بیرونی قوتیں ان وسائل پر قبضہ کرنا چاہتی ہیںہمیں کسی خیرات کی ضرورت نہیں، ہم اپنے حقوق کی جنگ لڑ رہے ہیں افغانستان میں دراندازی کیلئے دنیا بھر کے جنگجووں کو یہاں اکھٹا کیا گیا اپنی سرزمین پر پشتونوں کے حقوق پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا محمود خان اچکزئی نے کہا کہ چین امریکا سمیت دنیا بھر سے کہتے ہیں چور حکومت کے ساتھ معاہدے تسلیم نہیں کریں گے جسے ہمارا تیل، سونا، تانبا و دیگر وسائل درکار ہیں وہ آکر ہم سے براہ راست معاہدہ کریں ملک میں جو بکا ہے وہ وفادار جو نہ بکے وہ غدار ہوجاتا ہے محمود خان اچکزئی نے کہا ہے کہ جب تک ملک میں آئین وقانون کی بالادستی قائم نہیں ہوگی

یہ ملک نہیں چل سکتا غیر جمہوری قوتوں کے خلاف جب ہم کہہ رہے تھے کہ عام انتخابات اور پارلیمنٹ کے معاملات میں مداخلت ہورہی ہے تو کہتے تھے کہ یہ ملک اور پارلیمنٹ کے خلاف ہیں آج ثابت ہوگیا کہ ملک میں ہونے والے انتخابات میں اسٹیبلشمنٹ کا کردار رہا ہے جس کا اعتراف خود ان کے رفیق کار نے کی ہے جو ہمیشہ ان کے ساتھ ہوتے ہیں کرتار پور پر کوئی اعتراض نہیں لیکن کوئٹہ سے لیکر شورا وک تک جن لوگوں کی زمین جائیداد اس پار اور اس پار ہے وہاں کی دیوار بنا رہے ہیں ہمیں غدا ر کہنے والے انگریزوں کے غلام تھے اور انگریز کے فوج اورپولیس میں بھرتی ہونے والے آج ہمیں محب وطنی کی سرٹیفکیٹس دے رہے ہیں جب تک پارلیمنٹ کو بالادست نہیں بنا یاجاتا اس وقت تک آئین وقانون کی حکمرانی قائم نہیں ہوگی جب پشتونخوا ملی عوامی پارٹی اور پشتون قیادت ہمسایہ ممالک کیساتھ اچھے تعلقات کے خواہاں ہونے کی بات کرتے تو ہمیں غدار کہا جاتا ہم تو چاہتے تھے کہ جب تک ہمسائیوں کے ساتھ اچھے تعلقات نہیں ہونگے اس وقت تک ہم خطے میں بہترین کردار ادا نہیں کرسکتے

افغانستان میں مداخلت کی جارہی ہے جبکہ کرتار پور راہداری کھول کر دنیا کو کیا پیغام دینا چاہتے ہیں ہم کرتار پور راہداری کی مخالفت نہیں کرتے مگر ہم کہنا چاہتے کہ جس طرح کرتار پورراہداری میں کردار ادا کیا ہے اسی طرح چمن اور طورخم بارڈ ر پر بھی لوگوں کے درمیان امن دوستی اور بھائی چارے کاکردار ادا کریں انہوں نے کہا کہ سلیکٹڈ حکومت کوہرصورت میں جانا ہوگا جب تک سلیکٹڈ حکومت کا خاتمہ نہیں کیا جاتا ہمار جدوجہد جاری رہے گا ہمیں غدارکہا جارہا ہے ہم وطن کادفاع کررہے تھے لیکن آپ انگریز کے فوج اور پولیس میں بھرتی تھے آپ نے ہمیں مارا پیٹا اور قتل کیا ہم نے کچھ بھی نہیں کیا

محمود خان اچکزئی نے کہا کہ آئین میں واضح ہے کہ تمام ادارے پارلیمنٹ کے ماتحت ہیں مقتدر ادارے جتنے بھی طاقتور ہوجائیں انہیں پھر سیاست میں مداخلت نہیں کرنی چاہیے چین امریکا سمیت دنیا بھر سے کہتے ہیں چور حکومت کے ساتھ معاہدے تسلیم نہیں کریں گے جسے ہمارا تیل، سونا، تانبا و دیگر وسائل درکار ہیں وہ آکر ہم سے براہ راست معاہدہ کریںمولانا فضل الرحمان حکم دے تو صوبے میں جام کی حکومت کوایک ماہ میں ختم کرینگے جام کمال شریف آدمی ہے پرہیز گار بھی ہے لیکن ان سے پوچھا جائے کہ آپ کی حکومت عوام کی حکومت ہے یا زر وزور کے نام پر اقتدار دیا گیا ہے ملک میں سب سے بڑی کرپشن ہمارے ان اداروں نے کی ہے جنہوں نے یہاں منتخب حکومت کو گرا کر ایسے لوگوں پر مشتمل حکومت بنا یا جو آج بھی اقتدار پر براجماں ہے

. .

ضرور پڑھیں: عوام کی بالادستی سے ہی ملک چکے گا، مریم نواز

ضرور پڑھیں: خطے میں بھارتی بالادستی، امریکہ دل کی بات زبان پر لے آیا، امریکی وزیر خارجہ اور فوجی سربراہ وزیراعظم عمران خان سے ملاقات میں کیا مطالبہ کرنیوالے ہیں؟بڑی خبر آگئی

Top