سپریم کورٹ نے وفاقی ہسپتالوں کی صوبوں کو منتقلی سے متعلق کیس کا تفصیلی فیصلہ جاری کر دیا،بڑا اقدام غیر آئینی قرار

اسلام آباد (قدرت روزنامہ)سپریم کورٹ نے وفاقی ہسپتالوں کی صوبوں کو منتقلی سے متعلق کیس کا تفصیلی فیصلہ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ کیس میں اٹھارہویں ترمیم کی آئینی حیثیت پر کوئی سوال نہیں اٹھایا گیا . جمعرات کو جاری فیصلے کے مطابق اٹھارہویں ترمیم کی توثیق کا فیصلہ سپریم کورٹ پہلے ہی کر چکی ہے، جے پی ایم سی، این آئی سی وی ڈی کی سندھ کو منتقلی غیرآئینی قرار،این آئی سی ایچ اور این ایم پی کی صوبے کو منتقلی بھی غیر آئینی قرار دیدی گئی .

ضرور پڑھیں: مشرف کیس میں ٹربیونل کے فیصلے کیخلا ف سپریم کورٹ کی بجائے لاہور ہائیکورٹ جا کر وفاق نے معاملہ خود خراب کر دیا، حکومت نے کیا غلطی کر دی؟ ماہرین قانون نے حقیقت آشکار کر دی

فیصلے کے مطابق سندھ اسمبلی کا منظور شدہ این آئی سی وی ڈی ایکٹ 2014 غیر آئینی قرار دیدیا گیا.عدالت نے شیخ زید ہسپتال لاہور کی صوبائی حکومت کو منتقلی بھی غیرآئینی قرار دیدی.فیصلے میں کہاگیاکہ شیخ زید ہسپتال صوبے کو دینے کا فیصلہ وزیراعظم نے کیا وفاقی کابینہ نے نہیں، این آئی سی ایچ 1990 میں جے پی ایم سی سے الگ ہوکر وفاقی وزارت صحت کو منتقل ہوا.فیصلہ میں کہاگیاکہ اٹھارہویں ترمیم عملدرآمد کمیشن نے اپنی حدود سے تجاوز کیا، جے پی ایم سی اور این آئی سی وی ڈی کا وفاقی ادارے ہونا تسلیم شدہ ہے.

..

ضرور پڑھیں: یتیم بچیوں کی آہ و بکا مجھے چین سے سونے نہیں دیتی، افشاں لطیف نے وزیراعظم، سپریم کورٹ اور آرمی چیف سے مدد مانگ لی، نیا ویڈیو پیغام جاری


Top