پاکستان کا بھارتی وزیرخارجہ کے فرانسیسی اخبار کو انٹرویو اور بعض میڈیا اداروں کے ساتھ بات چیت میں دیئے گئے بے بنیاد بیانات کو مستردکردیا

اسلام آباد . (قدرت روزنامہ)پاکستان نی بھارتی وزیرخارجہ کے ایک فرانسیسی اخبار کو دیئے گئے انٹرویو اور بعض میڈیا اداروں کے ساتھ بات چیت میں دیئے گئے بے بنیاد بیانات کو مسترد کردیا ہے، یہ ہیجان بھارت کی اس گھمنڈی پن کا ایک اور آئینہ دار ہے جو بی جے پی کی حکومت کے پاکستان مخالف ایجنڈے کا حصہ ہے، قابل افسوس امریہ ہے کہ بی جے پی .

آر ایس ایس کے انتہا پسند نظریاتی اور قوم پرستی کے ایجنڈے کو مزید آگے بڑھانے اور بھارتی مقبوضہ کشمیر کی حقیقت پسندی سے عالمی توجہ ہٹانے کے لئے سینئر بھارتی عہدیدار دہشت گردی کے معاملے اور بھارتی مقبوضہ کشمیر کی صورتحال دونوں کے حوالے سے ایسے "حقائق" گھڑتے رہتے ہیں. دفتر خارجہ کی طرف سے اتوار کو یہاں جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ ہیجان بھارت کی اس گھمنڈی پن کا ایک اور آئینہ دار ہے جو بی جے پی کی حکومت کے پاکستان مخالف ایجنڈے کا حصہ ہے. یہ قابل افسوس امر ہے کہ بی جے پی.آر ایس ایس کے انتہا پسند نظریاتی اور قوم پرستی کے ایجنڈے کو مزید آگے بڑھانے اور بھارتی مقبوضہ کشمیر کی حقیقت پسندی سے عالمی توجہ ہٹانے کے لئے سینئر بھارتی عہدیدار دہشت گردی کے معاملے اور بھارتی مقبوضہ کشمیر کی صورتحال دونوں کے حوالے سے ایسے "حقائق" گھڑتے رہتے ہیں. اگر کوئی حقیقت ہے تو دہشت گردی کے لئے پاکستان بھیجا جانے والا بھارتی کمانڈر یادیو بھارت کا اصل چہرہ ہے.

اسی طرح ہندوستان کی مایوسی اس حقیقت سے بھی عیاں ہے کہ کئی دہائیوں سے بھارتی مقوضہ جموں و کشمیر میں مسلسل جاری ریاستی دہشت گردی کے باوجود ، بھارت کشمیری عوام کی پرامن آوازوں اور ان کے حق خود ارادیت کے اس مطالبے کو دبانیمیں ناکام رہا ہے ، جس کا اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں میں کشمیری عوام سے وعدہ کیا گیاہے. بھارت نفرت پھیلانے والوں اور انتہا پسند رویے اوربشمول جنہیں اپنی ہی اقلیتوں کے خلاف جرائم کے ارتکاب کی چھوٹ اورسرکاری سرپرستی حاصل ہے کے لئے بھی محفوظ پناہ گاہ بنا ہوا ہے. بھارتی مقبوضہ کشمیر میں صورتحال معمول پر آنے سے متعلق بھارتی وزیر کے فرضی دعویٰ کے حوالے سے سوال یہ ہے کہ یہ معمول کی صورتحال بیرونی دنیا کو کیوں نظر نہیں آرہی ہندوستان کے لئے اس حقیقت سے کوئی فرار کا راستہ نہیں ہے کہ اس کا ریاستی سرپرستی میں ہونے والا جبر کشمیری عوام کی مرضی اور ناگوار جذبے کونہیں توڑسکتا. بھارت کو یہ بہترین مشورہ ہے کہ وہ پاکستان کے ساتھ اپنے جنون ختم کرکے انکار کے بجائے حقیقت کا سامنا کرے. پاکستان اپنی جانب سے بھارتی مقبوضہ جموں و کشمیر کے عوام کی حالت زار کو اجاگر کرتا رہے گا اور جموں و کشمیر کے بین الاقوامی تنازعہ کے پرامن حل کے لئے اپنے مطالبے کا اعادہ کرتا ہے گا. پاکستان ایک ایسے ملک کی حیثیت سے جوسرحد پار سے ہونے والی دہشت گردی کا سب سے زیادہ متاثرہ ہے، خطے اور اس سے باہر امن و خوشحالی کے فروغ کے لئے علاقائی اور عالمی کوششوں میں تعمیری کردار ادا کرتا رہے گا.

..


Top