بھارتی بحریہ کا لڑاکا طیارہ گر کر تباہ

گوا (قدرت روزنامہ)بھارتی بحریہ کا لڑاکا طیارہ 'مگ 29 کے' مبینہ طور پر فنی خرابی کے باعث گر کر تباہ ہوگیا . ہندوستان ٹائمز میں شائع رپورٹ کے مطابق طیارہ تربیتی مشن پر تھا اور گوا سے پرواز بھرنے کے کچھ دیر بعد ہی گر کر تباہ ہوگیا .

ضرور پڑھیں: بھارتی بحریہ نے گذشتہ ہفتے تباہ ہونے والے مگ طیارے کا پول کھول دیا

بھارتی بحریہ کی جانب سے ٹوئٹ کیا گیا کہ 'تربیتی مشن کے دوران 'مگ 29 کے' لڑاکا طیارے کے انجن میں آگ لگ گئی تھی'. اس حوالے سے مزید کہا گیا کہ دبولیم میں آئی این ایس ہنسہ سے پرواز کے بعد انجن میں آگ لگی اور وہ گر کر تباہ ہوگیا تاہم کیپٹن ایم شیوکند اور لیفٹیننٹ سی ڈی آر دیپک یادیو طیارے سے بروقت باہر نکلنے میں کامیاب رہے.

بھارتی ویب سائٹ کے مطابق انجن میں خرابی کی وجہ فوری طور پر معلوم نہیں کی جا سکی لیکن غیر مصدقہ اطلاعات کے مطابق طیارہ پرندے سے ٹکرایا تھا. بحریہ کے ذرائع نے تصدیق کی کہ طیارہ تربیتی پائلٹ اڑا رہے تھے اور 'مگ 29 کے' ایک کھلے علاقے میں گر کر تباہ ہوا. یہ پہلا موقع نہیں کہ بھارتی افواج میں استعمال ہونے والے لڑاکا طیاروں اور ہیلی کاپٹروں کو حادثات کا سامنا کرنا پڑا ہے اس سے قبل بھی متعدد مرتبہ ایسے حادثات پیش آتے رہے ہیں. رواں برس 25 ستمبر کو بھارتی ایئر فورس کا مگ 21 لڑاکا طیارہ مدھیا پردیش کے علاقے گوالیور میں قائم ایئربیس کے قریب گر کر تباہ ہوگیا تھا. اس سے قبل 8 اگست کو بھارت کی ریاست آسام میں بھارتی فضائیہ کا روسی ساختہ جنگی طیارہ سکوئی 30 دوران پرواز گر کر تباہ ہوگیا تھا. علاوہ ازیں جون میں آئی اے ایف کا سامان بردار طیارہ ریاست اروناچل پردیش میں گر کر تباہ ہوگیا تھا. سامان بردار طیارے کے حادثے میں عملے سمیت آئی اے ایف کے 26 اہلکار ہلاک ہو گئے تھے.

واضح رہے کہ رواں برس 8 مارچ کو بھارتی ریاست راجستھان میں ایئر فورس کا مگ 21 لڑاکا طیارہ گر کر تباہ ہوگیا تھا. رپورٹ کے مطابق 2014 سے اب تک بھارتی فضائیہ کے مجموعی طور پر 26 جنگی طیارے، 6 ہیلی کاپٹرز، 9 تربیتی طیارے اور 3 سامان بردار طیارے تباہ ہوئے جبکہ ان حادثات میں 46 افراد بھی ہلاک ہوئے. خیال رہے کہ پاک-بھارت کشیدگی کے دوران 27 فروری کو پاکستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی کرنے پر مگ 21 طیارے لو مار گرایا تھا. اس دوران مگ 21 چلانے والے ایک بھارتی پائلٹ ابھی نندن کو بھی حراست میں لیا گیا تھا جسے بعد ازاں پاکستان نے جذبہ خیرسگالی کے تحت رہا کردیا تھا اور انہیں واہگہ بارڈر پر بھارتی حکام کے حوالے کیا گیا تھا.

..

ضرور پڑھیں: بھارتی بحریہ کی سکیورٹی فورس کے بھی پول کھلنا شروع


Top