single photo

حیران کن خبر : نواز شریف کا ذاتی معالج ڈاکٹر نہیں بلکہ۔۔۔۔۔ فواد چوہدری کے انکشاف نے شریف خاندان کو حیرت میں ڈال دیا

اسلام آباد(قدرت روزنامہ) وفاقی وزیرسائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے سابق وزیراعظم نوازشریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کو حکیم قرار دے دیا . ایک انٹرویومیں وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہاکہ نوازشریف کے معالج ڈاکٹر عدنان ڈاکٹر نہیں حکیم ہیں .

ضرور پڑھیں: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ذاتی معالج کی صدرکے سینے میں تکلیف بارے قیاس آرائیوں کی تردید

فواد چوہدری نے کہا کہ نوازشریف اس وقت شریف خاندان کی تحویل میں ہیں، کچھ دن میں جاتی امراکی دیواروں پرلکھا ہو گا نوازشریف کو رہا کرو. وفاقی وزیر نے کہا کہ ن لیگ کونوازشریف کے علاج پرسنجیدگی سے توجہ دینی چاہیے، خواجہ آصف، مریم نواز اور احسن اقبال صحت پرسیاست کررہے ہیں .انہوں نے کہا کہ شہبازشریف بھی چاہتے ہیں نوازشریف باہرجائیں.انہوں نے کہا کہ انڈیمنٹی بانڈ کی رقم ہم نے نہیں عدالت نے طے کی ہے،یہ پیسہ کسی کا ذاتی نہیں عوام کا ہے جس کومعاف نہیں کیا جا سکتا، ہم نے وہ رقم لکھی ہے جوعدالتوں نیان پرجرمانہ عائد کیا ہے، انڈیمنٹی بانڈمیں رقم لی گئی نہیں صرف لکھنے کا کہا گیا ہے. دوسری جانب ایک خبر کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف کا علاج کے لیے بیرون ملک جانے کا معاملہ تاحال تاخیر کا شکار ہو رہا ہے. نواز شریف علاج کے لیے لندن جانا چاہتے ہیں لیکن حکومت کی جانب سے سکیورٹی بانڈز کی شرط نے نواز شریف کے بیرون ملک جانے میں رکاوٹ ڈال دی ہے.

لیکن سابق وزیراعظم نواز شریف کو ڈاکٹرز نے نئی تجویز دے کر ان کے لندن جانے کے پلان پر مٹی ڈال دی ہے.تفصیلات کے مطابق کراچی سے آئے ڈاکٹر طاہر شمسی نے نواز شریف کو علاج کے لیے لندن کی بجائے امریکہ جانے کی تجویز پیش کر دی ہے. جس کے بعد شریف خاندان کی امریکی اسپتال میں علاج کے لیے مشاورت جاری ہے، نوازشریف کچھ روز لندن کے اسپتال میں زیرعلاج رہیں گے . سابق وزیراعظم نوازشریف کومکمل علاج کے لیے لندن سے امریکہ منتقل کیا جائے گا، شریف خاندان نے حسین نوازکوانتظامات کرنے کی ہدایت کر دی ہے.

..

ضرور پڑھیں: نواز شریف کے ذاتی معالج کا سابق وزیراعظم کی صحت پر تشویش کا اظہار

Top