single photo

ثقافت اور فنون لطیفہ ویژن 2030 کے پروگرام کا حصہ ہیں. سعودی وزیر

پیرس(قدرت روزنامہ) سعودی عرب نے سائنس، ثقافت اور فنون کو فروغ دینے کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے فنون و ثقاقت اقوام کے مابین مکالمے اور بات چیت کے کلچر کے فروغ کے ساتھ آنے والی نسلوں کے روشن اور خوش حاصل مستقبل کا ذریعہ بن سکتے ہیں. فرانس کے دارالحکومت پیرس میں منعقدہ 40 ویں یونیسکو جنرل کانفرنس میں سعودی عرب کے وزیر ثقافت اور کانفرنس میں شریک سعودی وفد کے سربراہ شہزادہ بدر بن عبد اللہ بن فرحان نے کہا کہ خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز ثقافت کو اپنے عمومی تصور میں دیکھتے ہیں. وہ قومی ثقافت کے مختلف پہلوﺅں کے اظہار کو ایک ایسی اہم بنیاد کے طور پر دیکھتے ہیں جو انسانی ترقی کی سمتوں کا تعین کرنے میں مدد کرتی ہے معاشروں کے مابین تفہیم کے پل تعمیر کرتی ہے تاکہ ایک مضبوط دنیا کو فروغ دیا جا سکے . جہاں لوگ مختلف ثقافتوں سے باہم جڑے ہوئے ہیں اور ریاست میں مل کر کام کرنے کی خواہش رکھتے ہیں وہاں قوموں کے آگے بڑھنے کے امکانات مزید روشن ہوجاتے ہیں. عرب نشریاتی ادارے کے مطابق سعودی وزیر نے کہا کہ سعودی عرب میں ثقافت اور فنون لطیفہ ویژن 2030 کے پروگرام کا حصہ ہیں یہ انقلابی ویژن ملک میں تمام شعبہ ہائے زندگی میں تبدیلیوں کی نشاندہی کرتا ہے . سعودی قیادت کی طرف سے متعارف کرتہ وین 2030ءقومی تبدیلی کا بنیادی ستون ہے اس کا مقصد ایک متحرک معاشرے، ایک خوشحال معیشت اور ایک متمول وطن کی تعمیر میں اپنا حصہ ڈالنا ہے.

انہوں نے زور دیتے ہوئے کہا کہ مملکت اپنے پر جوش وژن 2030 کے ذریعے مزید خوشحال مستقبل کی طرف پراعتماد اقدامات کر رہی ہے خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبد العزیز کی قیادت میں ملک جلد ہی تعلیم، ثقافت اور فنون لطیفہ سمیت متعدد شعبوں میں مثبت انداز میں ترقی کی منازل طے کرنا شروع کرے گا. شہزادہ بدر بن عبداللہ بن فرحان نے کہا کہ سعودی عرب یونیسکوکے اہداف اور اس کی ترقی کو وژن 2030ءکی روشنی میں آگے بڑھانے میں ہر ممکن تعاون کے لیے پرعزم ہے.انہوں نے وضاحت کی کہ مملکت یہ مانتی ہے کہ نوجوانوں کی تعلیم اور بحالی ہمارے معاشروں میں ثقافت کی تعمیر ، ترقی اور فروغ کے کسی بھی عمل کی بنیاد ہے انہیں انسانی اقدار اور قومی ثقافت سےہم آہنگ کرنا ریاست کی ذمہ داری ہے مختلف فنون سیکھنے سے جہاں ملک میں ترقی اور خوش حالی کے دروازے کھلیں گے وہیں سعودی قوم کے عالمی برادری کے ساتھ تعلقات مزید مستحکم اور وسیع ہوں گے.

.

ضرور پڑھیں: سعودی عرب کی زیر زمین ثقافت

.

Top