single photo

بابری مسجد فیصلہ: ’نہرو، گاندھی کا سیکولر ہندوستان، انتہاپسندی میں دب گیا‘

(قدرت روزنامہ)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کرتارپور راہداری کھولنے کے دن بھارتی سپریم کورٹ کی جانب سے بابری مسجد سے متعلق فیصلے کو معنیٰ خیز اور خوشیوں کو ماند کرنے کی کوشش قرار دے دیا . انہوں نے کہا کہ گاندھی اور نہرو کا ہندوستان دفن ہوچکا اور بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے انتہا پسند ہندو رہنما نریندر مودی کا نفرت آمیز ہندوستان اپنی جگہ بنا چکا .

ڈان نیوز سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بھارتی سپریم کورٹ کے مکمل فیصلہ جاری ہونے اور اس کا جائزہ لینے کے بعد ہی وزارت خارجہ اپنے باقاعدہ ردعمل کا اظہار کرے گا. ان کا کہنا تھا کہ بھارتی سپریم کورٹ نے رنگ میں بھنگ ڈالنے کی کوشش کی ہے. واضح رہے کہ بھارتی سپریم کورٹ نے تاریخی بابری مسجد کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے متنازع زمین رام مندر کی تعمیر کے لیے ہندوؤں کو فراہم کرنے اور مسلمانوں کو مسجد تعمیر کرنے کے لیے متبادل کے طور پر علیحدہ زمین فراہم کرنے کا حکم دے دیا ہے. چیف جسٹس سپریم کورٹ نے فیصلہ سناتے ہوئے حکم دیا کہ ’ایودھیا میں متنازع زمین پر مندر قائم کیا جائے گا جبکہ مسلمانوں کو ایودھیا میں ہی مسجد کی تعمیر کے لیے 5 ایکڑ زمین فراہم کی جائے‘. علاوہ ازیں وزیراعظم عمران خان کرتارپور راہداری منصوبے کا باقاعدہ افتتاح آج ( 9 نومبر کو) کریں گے جس میں بھارت کی معروف شخصیات اور سکھ یاتریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی.اس ضمن میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ نریندر مودی کی جانب سے نفرت کے بیج بونے کا سلسلہ جاری ہے، پہلے انہوں نے اپنے انتخابی منشور میں بابری مسجد پر مندر بنانے کا وعدہ کیا اور پھر رواں برس میں 5 اگست کو مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کردی. وزیر خارجہ نے کہا کہ ’بھارت نے تنگ نظری کا عملی مظاہرہ کردیا‘. شاہ محمود قریشی نے سوال اٹھایا کہ بھارتی سپریم کورٹ نے 27 برس بعد آج ہی فیصلہ سنانا تھا، 1992 سے مسئلہ چل رہا ہے. انہوں نے کہا کہ بھارت نے سپریم کورٹ کے فیصلے سے قبل ہی 144دفعہ نافذکر کے 5 ہزار پیرا ملٹری فورسز تعینات کردیے اوراسکول اور کالج بند کردیے. شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ہندوستان میں مسلمان سمیت دیگر اقلیت پہلے ہی بہت دباؤ میں تھے، اس فیصلے کے بعد ان پر مزید دباؤ بڑھے گا. انہوں نے کہا کہ بھارت نفرت کے بیج بورہا ہے اور ہم امن کی اذان دے رہے ہیں. بھارتی فیصلہ نئے ہندوستان کا عکس ہے، شیری رحمٰن پاکستان پیپلز پارٹی کی رہنما شیری رحمٰن نے اپنے ردعمل میں کہا کہ بابری مسجد سے متعلق بھارتی سپریم کورٹ کا فیصلہ انتہا پسند ہندوؤں (آر ایس ایس) کی نئی روش، نئے ہندوستان کا عکس ہے جسے اچھی طرح سمجھ لینا چاہے. انہوں نے کہا کہ بھارتی آئین اور عدالت مسلمانوں سمیت دیگر اقلیتوں کو تحفظ فراہم نہیں کرسکتا. ان کا کہنا تھا کہ عالمی سطح پر بھارت ابھرتی ہوئی معیشت ہے لیکن ان کی سرزمین پر غیرانسانی سلوک کا گراف بھی تیزی سے بڑھ رہا ہے.شیری رحمٰن نے کہا کہ بھارت کے ہندو کسی دوسرے مذہب کا احترام نہیں کرتے، وہ پاکستان کے ساتھ خیر سگالی کا رویہ اپنانا نہیں چاہتے، وہ منطقی بات کو اہمیت نہیں دینا چاہتے اور نفرت کے خواہاں ہیں. علاوہ ازیں پیپلز پارٹی کی سینیٹر نے کہا کہ بھارت میں انتہا پسند ہندو محض مفروضوں پر مسلمان کو قتل کررہے ہیں، ایسے حالات میں وہ اپنا تحفظ کرنا مشکل ہے. انہوں نے کہا کہ اگر مسلمان اجماعتی سطح پر بھارتی فیصلے کے خلاف کوشش کریں گے تو ان کی جان و مال سمیت املاک کو نقصان پہنچے گا. علاوہ ازیں پیپلز پارٹی کی سینیٹر نے کہا کہ بھارت کی جانب سے نیا سیاسی نقشہ جاری کرنے پر حکومت کی جانب سے کوئی جوائنٹ سیشن نہیں بلایا گیا. سب سے بڑی بھارتی عدالت نے ثابت کردیا وہ آزاد نہیں، فردوس عاشق وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ بھارت کی سب سے بڑی عدالت نے ثابت کردیا کہ وہ آزاد نہیں . انہوں نے کہا کہ بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے نے بھارت کے سیکیولر چہرے کو داغ دار کردیا. ان کا کہنا تھا کہ گاندھی اور نہرو کا نظریہ دم توڑ چکا ہے اور انتہا پسند نریندر مودی کا نظریہ پورے بھارت میں جگہ بنا چکا ہے.فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ نریندر مودی کا انتہاپسندانہ نظریہ ہندوستان میں جمہوریت کو کمزور کرے گی. انہوں نے کہا انتہا پسند نریندر مودی کی حکومت اور بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے سے دو قومی نظریے کی حقیقت کا روشن کردیا کہ بھارت میں اقلیتوں کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے. بھارتی سپریم کورٹ کا فیصلہ تاریخ پر طمانچہ ہے، عبدالغفور حیدری جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی) کے رہنما عبد الغفور حیدری نے بابری مسجد سے متعلق بھارتی فیصلے کو تاریخ پر طمانچہ قرار دے دیا. انہوں نے کہا کہ بھارتی سپریم کورٹ نے انتہا پسند ہندوؤں کا ساتھ دے کر ثابت کردیا کہ نئی دہلی اب سیلوکر نہیں بلکہ انتہاپسند ہندوؤں کی جگہ ہے.ان کا کہنا تھا کہ افسوس اس بات پر ہے کہ نریندر مودی کے برسراقتدار آنے پر مسلمانوں کے قتل عام میں اضافہ ہوا لیکن دنیا ان مظالم پر توجہ نہیں دے رہی. جے یو آئی کے رہنما نے کہا کہ عالمی برادری نریندر مودی کے ظلم و ستم پر توجہ کیوں نہیں دے رہی؟ انہوں نے کہا کہ بھارتی سپریم کورٹ کا فیصلہ پورے ہندوستان پر منفی اثرات کا باعث بنے گا. بھارتی فیصلہ پاکستان کے لیے تباہی نہیں، میجر جنرل آصف غفور پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ڈائریکٹر جنرل (ڈی جی) میجر جنرل آصف غفور نے اپنے ذاتی ٹوئٹ اکاؤنٹ میں کہا ہے کہ بھارتی فیصلہ پاکستان کے لیے تباہی نہیں بلکہ ہندوتوا سے انسانیت کی تباہی کی عکاسی ہے. میجر جنرل آصف غفور نے کہا کہ ’اچھا ہے آپ کی عدالت نے بابری مسجد فیصلہ کے لیے اسی تاریخ کا انتخاب کیا جب پاکستان دوسرے مذہب کے احترام میں قدم اٹھا رہا ہو گا‘

..

Top