مقبوضہ کشمیر کی صورتحال غیر مستحکم ہے، جرمن چانسلر

نئی دہلی (قدرت روزنامہ) جرمن چانسلر انجیلا مرکل نے کہا ہےکہ مقبوضہ کشمیر کے عوام غیر مستحکم حالات میں رہ رہے ہیں اور ان میں لازمی بہتری لائی جانی چاہیے . ڈان اخبار میں شائع خبررساں اداروں کی رپورٹس کے مطابق جرمن چانسلر انجیلا مرکل نے نئی دہلی کے دورے کے دوران اپنے ہمراہ موجود صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ نریندر مودی سے ملاقات میں مقبوضہ کشمیر کا معاملہ اٹھائیں گی .

ضرور پڑھیں: خان صاحب : یہ ایک کام کر لو تو کوئی آپ کو حکومت کو غیر مستحکم نہیں کر سکتا ،کیونکہ پھر عوام کے ساتھ ساتھ فرشتوں کی ایک فوج بھی آپ کے ساتھ کھڑی ہو گی ۔۔۔۔۔ بزرگ پاکستانی صحافی کا عمران خان کو زبردست مشورہ

انہوں نے مزید کہا تھا کہ وہ مقبوضہ کشمیر کی سابق ریاست سے متعلق بھارت کی پوزیشن سے آگاہ تھیں اب وہ متنازع علاقے میں امن بحال کرنے سے متعلق بھارتی وزیراعظم کے عزائم جاننا چاہتی ہیں. انجیلا مرکل نے کہا کہ 'وہاں موجود افراد کے لیے حالات اس وقت مستحکم نہیں ہیں اور ان میں بہتری لانی چاہیے'. خیال رہے کہ مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے کے بعد مقبوضہ وادی میں نئی دہلی کے فیصلے کے خلاف مظاہرے کیے جارہے ہیں.

بھارت نے 31 اکتوبر کو مقبوضہ کشمیر کی ریاست کو باضابطہ طور پر دو حصوں میں تقسیم کردیا تھا. اسی روز اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتیرس نے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر ایک مرتبہ پھر تشویش کا اظہار کیا تھا. انتونیو گوتیرس کے نائب ترجمان فرحان حق نے کہا تھا کہ 'سیکریٹری جنرل مقبوضہ کشمیر کی صورتحال سے متعلق ہمارے بنیادی خدشات کا اظہار ماضی میں بھی کرچکے ہیں'. بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کو 2 وفاقی اکائیوں میں تقسیم کرنے کے فیصلے پر عملدرآمد سے متعلق انہوں نے کہا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی اقدامات کے بعد پاکستان اور بھارتی رہنماؤں سے ملاقات میں انتونیو گیوتیرس نے دونوں فریقین سے مذاکرات کے ذریعے اس مسئلے کو حل کرنے کی اپیل کی تھی.

..

ضرور پڑھیں: ہمیں پتہ تھا معیشت مستحکم ہوتے ہی کچھ عناصر نقصان پہنچانے کی کوشش کریں گے،کا میاب چینی دورے کے بعد ایسے واقعات کی اطلاعات تھیں، پاکستان کو کمزور دیکھنے والوں کو پا ک چین تاریخی معاہدوں کی فکر تھی، حملہ ناکام بنانے والے شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کرتا ہوں


Top