مودی کی سعودی عرب آمد۔۔۔ کونسے خفیہ معاہدوں پر دستخط ہوں گے؟ راز فاش ہو گیا

ریاض (قدرت روزنامہ) پاکستان کی جانب سے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے طیارے کو فضائی حدود استعمال کرنے کی اجازت نہ ملنے کے باعث بھارتی وزیر اعظم پیر کو طویل راستے سے سعودی عرب پہنچ گئے، مودی کے دورے کے موقع پر توانائی‘ ڈیفنس‘ سول ایوی ایشن اورانسداد دہشت گردی اسٹرٹیجک پارٹنرشپ کونسل کے قیام سے متعلق تقریباً ایک درجن معاہدوں پر دستخط ہوں گے . ان کا خصوصی بوئنگ طیارہ دہلی سے ممبئی پہنچا اور پھر وہاں سے بحیرہ عرب کے اوپر سے اڑان بھرتے ہوئے سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض پہنچا .

اس کا اصولی فیصلہ سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے انڈیا کے دورے کے موقع پر فروری 2019ء میں کیا گیا تھا. نریندر مودی خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے ساتھ اہم مذاکرات کریں گے. دورہ 2 روزہ ہوگا

جس میں دونوں ملکوں کے رہنما عالمی امن و سلامتی کے فروغ اور خطے میں استحکام پر تبادلہ خیال کریں گے. سعودی سفیر نے مزید بتایا ہے کہ سعودی عرب اورانڈین قائدین توانائی کے شعبے میں تعاون بڑھانے اور تجارتی وسرمایہ کاری تعاون کو فروغ دینے جبکہ تجارت میں تنوع پیدا کرنے اور شراکت کے امکانات سے زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھانے کی تدابیر پر مذاکرات کریں گے. انڈیا کے اعلیٰ عہدیداروں نے عکاظ اخبار کو بتایا کہ نریندر مودی، شاہ سلمان اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کو جنوبی ایشیا میں امن و سلامتی کے لیے کیے گئے اقدامات سے آگاہ کریں گے جبکہ مشرق وسطیٰ اور جنوبی ایشیا کی تازہ صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا جائے گا.نریند ر مودی کے ہمراہ اعلیٰ سطح کا وفد ہوگا جو اہم وزراء،اعلیٰ عہدیداروں اور سرمایہ کاروں پر مشتمل ہوگا.

..


Top