single photo

پاکستانی طالب علم نے چیٹنگ کرنے کے لئے سرجری کے ذریعے اپنے جسم میں کیا چیز لگوا لی؟ جان کر یقین نہ آئے

پاکپتن شریف (قدرت روزنامہ) نالائق طالب علم امتحانات میں نقل کرنے کے کئی حربے آزماتے ہیں تاہم گزشتہ دنوں پاکپتن شریف میں ایک طالب علم انٹرمیڈیٹ کے امتحان میں ایسے طریقے سے نقل کرتے ہوئے پکڑا گیا کہ سن کر آپ کی حیرت کی انتہاءنہ رہے گی . ڈیلی ڈان کے مطابق اس طالب علم کی شناخت محمد فاروق کے نام سے ہوئی ہے جس نے اپنے کان اور گردن کی سرجری کروا کر ان میں ہیڈ فونز نصب کروا رکھے تھے .

ضرور پڑھیں: پاکستانی طالب علم نے بھارتی ریکارڈ توڑ دیا، نام گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں درج

ہیڈفونز اس کے کان میں تھے اور ان کی تار اس کی گردن سے ہوتی ہوئی بغل میں آ کر جسم سے باہر نکل رہی تھی اور بغل میں اس نے ایک چھوٹا سا موبائل فون ’نصب‘ کر رکھا تھا. رپورٹ کے مطابق محمد فاروق اس روز کیمسٹری کا پیپر دے رہا تھا. جب نگران اس کے پاس سے گزرا تو اسے موبائل فون کی ہلکی سی ’بیپ‘ سنائی دی جس پر اس نے بغور اس طالب علم کو دیکھا تو اس کی گردن پر زخموں پر لگانے والی پٹی لپٹی ہوئی تھی.

جب اس نے پٹی اتروائی تو جہاں جہاں سے ہیڈ فونز کی تار گزر رہی تھی وہاں جلد پر کٹ نظر آ گیا. اس پر اس سے پیپر چھین کر تحقیقات شروع کی گئیں. پوچھ گچھ میں اس طالب علم نے اعتراف کر لیا کہ اس نے ایک مقامی ڈسپنسر سے کان اور گردن کی سرجری کروائی تھی اور ان میں ہیڈ فون نصب کروایا تھا. اس اعتراف کے بعد طالب علم کو پاکپتن سٹی پولیس کے حوالے کر دیا گیا.

..

Top