single photo

چین پی ٹی آئی حکومت پر شک کرنے لگا، عمران خان کے اوپر سب سے بڑا اعتراضات سامنے آگئے

اسلام آباد(قدرت روزنامہ)سینئر صحافی اور کالم نگار سلیم صافی اپنے آج کے کالم ’’گڈ اور بیڈ سیاستدان‘‘ میں لکھتے ہیں کہ . .

ضرور پڑھیں: پی ٹی آئی حکومت میں اپنا حق مانگنا جرم بن گیا، اسلام آباد پولیس کا بیسک ایجو کیشن اساتذہ پر دھاوا متعدد گرفتار ،خواتین بھی شامل ،کئی ٹیچرز زخمی

.چینی حکومت پی ٹی آئی کی قیادت سے چار وجوہات کی بنا پر شاکی تھی. اول اس بنیاد پر کہ عمران خان کے بیٹے برطانیہ کے شہری ہیں. دوم اس بنیاد پر کہ نواز شریف اور بالخصوص شہباز شریف ان کے فیورٹ تھے کیونکہ انہوں نے سی پیک پر ویسے کیا جیسے چینیوں نے چاہا.سوم اس بنیاد پر کہ چینی صدر کو سی پیک کے حوالے سے انتہائی اہم دورہ پاکستان پی ٹی آئی کے دھرنے کی وجہ سے ملتوی کرنا پڑا تھا اور چہارم اس بنیاد پر کہ پی ٹی آئی کی قیادت اور پختونخوا کی حکومت نے مسلم لیگ(ن) کی دشمنی میں سی پیک کے حوالے سے چینیوں کے لئے ناپسندیدہ رویہ اختیار کیا تھا.انتخابات کے بعد بڑی مشکل سے ان کے چین کے ساتھ تعلقات استوار کئے گئے

لیکن ان کے وزرا کے بیانات اور رویے سے چین بدظن ہوگیا. دوبارہ چین کے ساتھ وعدے وعید ہوئے لیکن درمیان میں آئی ایم ایف آٹپکا. گزشتہ پانچ سال کے دوران امریکہ اور آئی ایم ایف کا مطالبہ رہا کہ سی پیک کے معاہدوں کی تفصیلات اس کے ساتھ شیئر کی جائیں.اب آئی ایم ایف کے نمائندے وزیر خزانہ بنے اور آئی ایم ایف ہی کے نمائندے چیئرمین ایف بی آر بنے. یہی وجہ ہے کہ سی پیک کے حوالے سے چین کا رویہ سرد مہری کا شکار ہوگیا ہے لیکن عمران خان صاحب پھر بھی زندہ باد ہیں کیونکہ وہ گڈ سیاستدان ہیں اور باقی بیڈ سیاستدان ہیں.وہ پھر بھی محب وطن ہیں لیکن زرداری اورنواز شریف خاکم بدہن مودی کے یار ہیں.

..

ضرور پڑھیں: پی ٹی آئی حکومت کا پہلا سال، ٹیکس ریٹرن فائلرز کی تعداد میں 3 گنا اضافہ

Top