single photo

ہمارا دھرنا نہیں مارچ ہوگا اور اسکی مدت بھی زیادہ نہیں ہوگی: مولانافضل الرحمان کا اعلان

اسلام آباد(قدرت روزنامہ) مولانافضل الرحمان نے اعلان کیا ہے کہ انکا دھرنا نہیں مارچ ہوگا اور اسکی مدت بھی زیادہ نہیں ہوگی . مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ انہیں گرفتاری یا نظر بندی کا کوئی خوف نہیں ہے اور وہ اتنا احتجاج کرینگے جس دوران انکے کارکنان تھک نہ جائیں .

رہنما جمیعتِ علماء اسلام ف نے کہا ہے کہ اسمبلیوں سے تمام اپوزیشن کے اجتماعی استعفے دینے کی تجویز زیر غور ہے مگر ہم اسمبلیوں سے استعفوں کا فیصلہ مناسب وقت پر کرینگے. انہوں نے کہا کہ آزادی مارچ روکنے پر کوئی ڈیل یا سمجھوتہ نہیں ہوگا، حکومت کا مینڈیٹ جعلی ہے ہم نے اسے شروع دن سے تسلیم نہیں کیا ہے. ایک سوال کے جواب میں مولانا نے کہا کہ گرفتاری یا نظر بندی کا کوئی خوف نہیں ہے، وزیر اعظم کے استعفی کے مطالبہ سے پیچھے نہیں ہٹیں گے. انہوں نے مزید کہا کہ مرکزی قیادت کو گرفتار کیا گیا تو جوابی منصوبے تیار ہیں.

دوسری جانب ملک بھر کی 25 مذہبی تنظیموں نے آزادی مارچ کی مخالفت کردی ہے،اہلسنت علماء کرام نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کا آزادی مارچ پاکستان کی سلامتی کے خلاف ہے،تنظیمات اہلسنت پاکستان آزادی مارچ کا حصہ نہیں بنے گی. میڈیا رپورٹس کے مطابق جامعہ بنوریہ کراچی اور متحدہ پاکستان کونسل کے بعد ملک کی مزید 25 مذہبی تنظیموں نے آزادی مارچ کی مخالفت کردی ہے. اہلسنت پاکستان کے علماء کرام نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کا آزادی مارچ پاکستان کی سلامتی کے خلاف ہے. اہلسنت پاکستان کا اتحاد 25 تنظیموں پر مشتمل ہے، صاحبزادہ حامد رضانے کہا کہ مدارس سیاسی مقاصد کیلئے استعمال نہیں ہوں گے.انہوں نے کہا کہ اس وقت ملک اندرونی اور بیرونی مسائل سے دوچار ہے ، کشمیر کا ایشو سے بڑا مسئلہ ہے.

..

Top