single photo

اثاثہ جات کیس،احتساب عدالت نے خورشید شاہ کے جسمانی ریمانڈ پر محفوظ فیصلہ سنا دیا

سکھر (قدرت روزنامہ)احتساب عدالت سکھر نے اثاثہ جات کیس میں خورشیدشاہ کے جسمانی ریمانڈ پر محفوظ فیصلہ سنا دیا،عدالت نے پیپلزپارٹی کے رہنما خورشید شاہ کا15 روزہ جسمانی ریمانڈمنظور کرلیااور دوبارہ 4 نومبر کو عدالت پیش کرنے کا حکم دیدیا .

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میںپیپلز پارٹی کے رہنماخورشید شاہ کے خلاف آمدن سے زائداثاثہ جات کیس کی سماعت ہوئی، نیب پراسیکوٹر نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ نیب کی جانب سے کی جانے والی تحقیقات سے عدالت کوآگاہ کیا .

ضرور پڑھیں: اثاثہ جات کیس ،جے یو آئی (ف)کے رہنما اکرم درانی 7 اکتوبر کو نیب آفس طلب

نیب پراسیکیوٹر نے موقف اختیار کیا کہ خورشید شاہ نیب سے تعاون نہیں کررہے ،

خورشید شاہ کے خلاف ابھی مزید تحقیقات جاری ہیں اس لیے ملزم کے جسمانی ریمانڈ میں 15روز کا اضافہ کیا جائے. سابق چیئر مین سینیٹ رضا ربانی نے کیس کی پیروی کرتے ہوئے کہا کہ میراپہلے دن سے یہ کہنا ہے کہ خورشیدشاہ کوسیاسی انتقام کانشانہ بنایاجارہاہے، اسمبلی کے فنڈزریزنگ اکاؤنٹ کی بناپرخورشیدشاہ کو1ماہ سے حراست میں رکھاگیاہے،

نیب نے خورشیدشاہ کو جوسوال نامہ دیااس کاجواب جمع کرادیا گیاہے ،یہ سب ہی پوچھنا اورکرناتھاتوگرفتارکرنے کی کیا ضرورت تھی؟نیب کومزیدریمانڈدینے کی بجائے خورشیدشاہ کاجوڈیشل ریمانڈدیا جائے.احتساب عدالت سکھر نے اثاثہ جات کیس میں خورشیدشاہ کے جسمانی ریمانڈ پر محفوظ فیصلہ سنا دیا،عدالت نے پیپلزپارٹی کے رہنما خورشید شاہ کا15 روزہ جسمانی ریمانڈمنظور کرلیااور دوبارہ 4 نومبر کو عدالت پیش کرنے کا حکم دیدیا.

..

ضرور پڑھیں: منی لانڈرنگ، اثاثہ جات کیس: حمزہ شہباز کے جسمانی ریمانڈ میں 14 روز کی توسیع

Top