single photo

پاکستان میں 2 طبقات عمران حکومت کی پالیسیوں سے بہت تنگ ہیں ۔۔۔۔ ایک امریکی اخبار کی حیران کن رپورٹ سامنے آ گئی

کراچی (قدرت روزنامہ) ووٹرز اور کاروباری طبقہ حکومت کے معاشی پروگرام کی تکلیف سے دوچار ہے اور متوسط طبقے کا شخص مر رہا ہے . جبکہ ایک سال پہلے کے مقابلے میں 89؍ فیصد گھریلو صارفین خریداری کے بارے میں کم پراعتماد ہیں .

ضرور پڑھیں: ٹرمپ کے بعد مشرف جھوٹے ترین صدر تھے، امریکی اخبار کا دعویٰ،بڑے دعوے کردیئے

امریکی اخبار وال اسٹریٹ جرنل نے پاکستان کی معاشی صورتحال پر لکھتے ہوئے پاکستان کے سابق وزیر خزانہ حفیظ پاشا کے حوالے سے لکھا کہ ان کے مطابق حکومت کے دوسرے سال کے اختتام تک 20؍ لاکھ ورکرز ملازمت سے محروم اور 80 لاکھ غربت کی لپیٹ میں آجائیں گے. جبکہ اس کے برعکس حکومت کا مؤقف ہے کہ اقتصادی بنیادوں میں بہتری نظرآرہی ہے ، ٹیکس میں 16فیصد اضافہ ہوا.انہوں نے2011ء میں عرب ممالک میں عوامی بغاوت کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اب پاکستان میں بھی عرب اسپرنگ پید ا کررہے ہیں.اور یہ بم پھٹنے کا منتظر ہے.حکومت امیروں سے ٹیکس کی بجائے چھوٹے تاجروں کو نشانہ بنارہی ہے.اگست کے ایک بین الاقوامی سروے سے پتا چلتا ہے کہ ایک سال قبل کے مقابلے میں 89 فی صد گھریلو خریداری کے بارے میں کم پراعتماد ہیں. فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے رواں ماہ وزیر اعظم کو شکایت کے لئے خط لکھا تھا کہ اقتدارسنبھالنے کے 13 ماہ گزر جانے کے بعد بھی معیشت میں کوئی صحت مند علامت نہیں دکھائی دے رہی .

مرکزی بینک کے ماہانہ سروے کے مطابق ، کاروباری اعتماد منفی برقرار ہے. اخبار کے مطابق ایک سال قبل انتخابی مہم کے دوران ، سابق کرکٹ اسٹار عمران خان ایک کروڑملازمتیں پیدا کرنے ، کم لاگت والی رہائش اور بہتر صحت اور تعلیم کی خدمات کی فراہمی کا وعدہ کرتے ہوئے وزارت عظمیٰ کے عہدے پر براجمان ہوئے .اب عمران خان خود اس حمایت کو جانچ رہے ہیں معاشی سادگی کے منصوبوں کی وجہ سے وہ متوسط طبقے پر زیادہ ٹیکس لگانے پر مجبور ہیں جبکہ معیشت تیزی سے سست ہو رہی ہے.اقتصادی مسائل نے وزیر اعظم عمران خان کی انتخابی مہم کے وعدوں کو پورا کرنے کی صلاحیت میں مشکلات پیدا کردی ہیں. جبکہ رواں ماہ دو درجن بزنس ٹائکونز نے اپنے اپنے تحفظات آرمی چیف جنرل قمر باجوہ کے سامنے رکھے .اجلاس میں شریک افراد کے مطابق ، جنرل باجوہ نے انہیں بتایا کہ وہ حکومت اور اس کی پالیسیوں کے پیچھے کھڑے ہیں. حزب اختلاف کے سیاستدانوں کا کہنا ہے کہ فوج نے عمران خان کو اقتدار میں لانے میں مدد کی جبکہ عمران خان اور فوج اس الزام کی تردید کرتے ہیں

..

ضرور پڑھیں: طیب اردگان ترکی کے لیے کونسا خطرناک ترین ہتھیار حاصل کرنے کی کوششوں میں مصروف ہیں ؟ امریکی اخبار نیویارک ٹائمز نے حیران کن دعویٰ کر دیا

Top