single photo

’’ اتنی توبہ گناہوں کے بعد نہیں کی جتنی عمران خان کو ووٹ دینے کے بعد کر رہا ہوں ۔۔۔‘‘ حکومت کی ناقص پالیسیوں کا نتیجہ ، جانتے ہیں اچانک کس طاقت نے مولانا فضل الرحمان کا ساتھ دینے کا اعلان کر دیا ؟

لاہور (قدرت روزنامہ) تحریک انصاف کی جانب سے ابھی تک کامیابی کے دعوے کیے جارہے ہیں لیکن اقتدار میں آنے کے بعد حکومت کو جس طرح کی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ہے اس سے صاف ظاہر ہو رہا ہے کہ حکومت ابھی تک ڈیلیور نہیں کر پارہی، عوام کی امیدوں پر پورا نہیں اتر پار رہی، وزیر اعظم عمران خان اور حکومتی وزراء بار بار قوم سے اپیل کر رہے ہیں کہ کچھ دیر کے لیے انتظار کر لیں لیکن اب عوام کا پارہ ہائی ہوتا جارہا ہے، اور عوام بھی دیگر پارٹیوں کی جانب دیکھتی ہوئی دکھائی دے رہی ہے، مولانا فضل الرحمان سمیت دیگر اپوزیشن جماعتیں بھی یہی چاہتی ہیں کہ کسی نہ کسی طرح اس حکومت سے جان چھوٹ جائے، اگر گراس روٹ لیول تک جا کر عوام کی رائے پوچھی جائے تو عوام حکومت کی پالیسیوں، مہنگائی اور بیروزگاری سے سخت تنگ دکھائی دے رہی ہے، اور حکمران جماعت پر برستی دکھائی دیتی ہے، نجی ٹی وی چینل کی جانب سے جب شہریوں سے رائے لی گئی تو شہریوں نے حکومتی پالیسیوں پر سخت اظہار ناپسندیدگی کر دیا ، ایک ششہری نے نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کو ووٹ دینے کے بعد ایسا لگ رہا ہے جیسے میں نے کوئی گناہ کر دیا ہو، میں اپنے کیے پر توبہ کرتا ہوں، ہمیں عمران خان کی پالیسیوں نے کچھ نہیں دیا، پاکستان میں بیروزگاری بڑھ گئی ہے، پٹرول، گیس، ڈیزل ہر چیز کی قیمت پہلے سے کئی گناہ زیادہ بڑ چکی ہے، کھانے پینے کی اشیاء مہنگی اور نایاب ہوتی جا رہی ہیں، عمران خان کہتے تھے کہ روزانہ کی بنیاد پر 12 سو ارب روپوں کی چوری ہوتی ہے، اب وہ خود آچکے ہیں انہوں نے چوری روک دی ہے تو پھر قرضے کیوں لیتے پھر رہے ہیں، قرضوں کے باوجود ڈالر اوپر اور پاکستانی روپیہ نیچے جاتا جا رہا ہے، سونے کی قیمت بھی کنٹرول میں نہیں آرہی ، پاکستان میں ایمانداری ہونی چاہیئے لیکن یہاں سارے بے ایمان ہیں .

.

.

Top