single photo

عمران اینڈ کمپنی اِن ایکشن: 27 اکتوبر کو فضل الرحمان کے آزادی مارچ سے نمٹنے کیلئے کیا حکمت عملی تیار کر لی گئی؟ تازہ ترین خبر

لاہور (قدرت روزنامہ) وزیر اعظم عمران خان کی حکومت کیخلاف جے یو آئی ایف (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان 27 اکتوبر کو ملک پھر میں آزادی مارچ کا آغاز کرنے والے ہیں جس میں اپوزیشن کلیدی کردار ادا کر رہی ہے جبکہ انکی طرف سے فندڈنگز بھی کی جانے کا اطلاعات مل رہی ہیں . تفصیلات کے مطابق جمیعت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ فضل الرحمان کے آزادی مارچ سے نمٹنے کے لیے وفاقی حکومت نے حکمت عملی تیار کرلی ہے .

مصدقہ ذرائع کے مطابق حکومت نے وزیر اعلی، گورنر، وزیر قانون، وزراء اور اتحادیوں سے تجاویز طلب کر لیں ہیں ، سربراہ جے یو آئی کی گرفتاری بھی زیر غور ہے جبکہ مولانا اور ان کے بھائیوں اور قریبی ساتھیوں کے پرانے کیسز بھی کھولنے کا امکان ظاہر کیا جا ریا ہے . وزراء ڈیرہ اسماعیل خان میں زمینوں کی غیر قانونی الاٹمنٹ کی نیب سے تحقیقات کرانے کا عندیہ دے چکے ہیں. وفاق نے مولانا کو پنجاب کے کن کن مدارس سے مدد مل سکتی ہے ، ساتھ دینے والی سیاسی جماعتوں کے کارکنوں اور رہنماوں کی فہرستیں بھی طلب کرلی ہیں. بتایا گیا ہے کہ حکومت کی پہلی ترجیح مارچ کو بیک ڈور ڈپلومیسی کے ذریعے ناکام بنانا ہے . چودہری پرویز الہی، گورنر پنجاب اور دیگر رہنماؤں کا حزب اختلاف کی جماعتوں سے جلد رابطے کا بھی امکان ہے . مزید بتایا گیا ہے کہ مولانا کے جلوسوں کو فنڈنگ کیلئے کچھ ڈویلپرز ، معروف بزنس مینوں اور کچھ ہنڈی کا کاروبار کرنے والے افراد اور ٹریڈرز کو (ن) لیگ کی اہم شخصیت کی طرف سے ہدایات دیدی گئی ہیں. یہ بھی پلاننگ کی گئی ہے کہ جس شہر میں ان کا جلوس جائے وہاں کی مارکیٹیں بند ہوں ، اس کیلئے ٹریڈرز سے رابطے اور طاقت کا استعمال کرنا پڑے تو کیا جائے . مسلم لیگ (ن) کے رہنما احسن اقبال نے جے یو آئی آیف کے مارچ کو خیر مقدم کیا.

..

Top