single photo

شہبازشریف اور نوازشریف کا اسٹیبلشمنٹ سے نمٹنے کا الگ الگ طریق کار ہے، انصار عباسی

      اسلام آباد (قدرت روزنامہ)سینئر ملکی صحافی اور تجزیہ کار انصار عباسی کہتے ہیں کہ نوازشریف اور شہبازشریف کا اسٹیبلشمنٹ سے ڈیل کرنے کا طریقہ الگ الگ ہے . دونوں میں ایک سے ایک بھائی ایسا ہے جو اینٹ کا جواب پتھر سے دینااور مقابلہ کرنا چاہتا ہے جبکہ دوسرا بھائی ٹھنڈے دل و دماغ کے ساتھ اور افہام و تفہیم کے ساتھ معاملات کو طے کرنا چاہتاہے .

اسی بنیاد پر دونوں بھائیوں کو الگ کرنے اورتعلقات میں دراڑ ڈالنے کی بھی کوشش کی جا رہی ہے. چھوٹے بھائی کو کہا جا رہا ہے کہ قوہ بڑے بھائی کی پیٹھ میں چھرا گھونپ دے لیکن چھوٹا بھائی ایسا کرنے کےلئے بالکل بھی تیار نہیں ہے اور اس حکم عدولی کی وجہ سے شہبازشریف کو بھی مشکلات جھیلنا پڑی. دونوں بھائیوں میں ادب و احترام اور خون کا مثالی رشتہ آج بھی قائم ہے. بچوں کے اختلافات انتہائی شدید نوعیت کے ہیں. اور وہاں رشتوں کی شدت بھی آڑے نہیں آئے گی لیکن شہبازشریف اپنے بھائی کو کسی بھی صورت میں نہیں چھوڑ سکتے. مولانافضل الرحمان کے آزادی مارچ سے شہبازشریف دور رہنا چاہ رہے تھے لیکن اپنے بھائی کے حکم کے سامنے وہ سر جھکانے پر مجبور ہو گئے ہیں.تاہم ممکن ہے کہ آزاد ی مارچ کے دوران وہ کچھ لو پروفائل رہ کو اپنا کردار ادا کریں.

..

Top