single photo

پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل: آج خواجہ برادران کو عدالت میں پیش کیوں نہیں کیا گیا ؟ تازہ ترین خبر

لاہور(قدرت روزنامہ)خواجہ سعدرفیق اورسلمان رفیق کےخلاف سماعت آج ہورہی ہے ، پولیس سیکیورٹی خدشات کے سبب خواجہ برادران کو عدالت میں پیش نہ کرسکی . تفصیلات کے مطابق لاہور کی احتساب عدالت کے جج جواد الحسن پیراگون اسکینڈل کی سماعت کر رہے ہیں، خواجہ برادران کے وکلاء کی جانب سے عدالت کے دائرہ اختیار کو چیلنج کیا گیا ہے .

ضرور پڑھیں: خواجہ برادران کی درخواست پر سماعت 14 اکتوبر تک ملتوی

مقدمے کی سماعت کے موقع پرپولیس کی جانب سے خواجہ برادران کو پیش نہ کیا گیا. نیب کے وکیل نے عدالت سے کہا کہ لاہور بارکی ہڑتال ہے ،سیکیورٹی خدشات کی وجہ سےپیش نہیں کر سکتے. اس موقع پر خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کے وکلا کی جانب سے بھی عدالت سے استدعا کی گئی کہ آج وکلا کی ہڑتال ہے لہذا سماعت ملتوی کی جائے.احتساب عدالت کے جج جواد الحسن نے خواجہ برادران کی جانب سے سماعت ملتوی کرنے کی درخواست مسترد کردی اور کہا کہ خواجہ برادران کےوکلا ءبحث کریں ورنہ عدالتی دائرہ اختیار کو چیلنج کرنے کی درخواست مسترد کر دوں گا .انہوں نے مزید کہا کہ آج ہی دلائل کےبعدعدالتی دائرہ اختیار کے خلاف درخواست پرفیصلہ دوں گا ، یہ حکم دے کر عدالت نےخواجہ برادران کےوکلاکو بحث کےلیے فوری طلب کرلیا.خواجہ برادران کو پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل میں گرفتار کیا گیا ہے جبکہ دونوں بھائی پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل سمیت 3 مقدمات میں نیب کو مطلوب تھے.واضح رہے 11 دسمبر 2018 کو لاہور ہائی کورٹ نے مسلم لیگ ن کے رہنماؤں خواجہ سعد رفیق اور ان کے بھائی سلمان رفیق کی عبوری ضمانت خارج کردی تھی، جس کے بعد قومی احتساب بیورو (نیب) نے دونوں بھائیوں کو حراست میں لے لیا تھا. یاد رہے کہ خواجہ برادران پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل میں گرفتار ہیں، نیب کے مطابق وفاقی وزیر ہوتے ہوئے خواجہ سعد رفیق نے اپنے اختیارات کا غلط استعمال کیا تھا اور شواہد کو ٹمپر کرنے کی کوشش بھی کی، دونوں بھائیوں نے اپنے ساتھیوں سے مل کر عوام کو دھوکہ دیا اور رقم بٹوری.نیب کا کہنا ہے کہ خواجہ برادران پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی سے فوائد حاصل کرتے رہے، خواجہ برادران کے نام پیراگون میں 40 کنال اراضی موجود ہے.نیب کی تفتیشی رپورٹ کے مطابق خواجہ سلمان اور ندیم ضیا کے بیٹوں کے نام پر 2 ارب 96 کروڑ کی رقم جاری ہوئی، سعد رفیق کے اکاؤنٹس میں 8 سال کے دوران 46 کروڑ 60 لاکھ منتقل ہوئے.رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 500 سے زائد ٹرانزیکشنز 2010 سے 2018 کے درمیان ہوئیں، سعد رفیق کے ڈی ایچ اے بینک اکاؤنٹس میں 13 کروڑ 30 لاکھ منتقل ہوئے جبکہ دوسرے اکاؤنٹ میں 7 کروڑ 50 لاکھ منتقل ہوئے.تفتیشی رپورٹ میں بتایا گیا کہ سعد رفیق کے مزید 3 اکاؤنٹس میں 6 کروڑ 70 لاکھ روپے منتقل ہوئے، سعدان ایسوسی ایٹ کے بینک اکاؤنٹس میں 15 کروڑ منتقل ہوئے. ایسوسی ایٹ کے 2 اکاؤنٹس میں 2012 سے 2018 تک رقم منتقل ہوئی.

..

ضرور پڑھیں: خواجہ برادران کی بریت کی درخواست، 17 ستمبر تک ریمانڈ میں توسیع

Top