single photo

بریکنگ نیوز: بالآخر چپ کا روزہ ٹوٹ گیا ۔۔۔۔ جنرل (ر) راحیل شریف نے عمران خان اور مسئلہ کشمیر کے حوالے سے بڑا اعلان کر دیا

ریاض (قدرت روزنامہ) سابق آرمی چیف اور اسلامی افواج کے سربراہ جنرل راحیل شریف نے مقبوضہ کشمیر کے لیے وزیراعظم عمران خان کی کوششوں کو سراہا ہے . انہوں نے مقبوضہ کشمیر کے معاملے پر پاک فوج اور پاکستانی عوام کی بھی تعریف کی .

ضرور پڑھیں: جنرل (ر) راحیل شریف اور ڈاکٹر طاہرالقادری کے درمیان گھنٹوں پر محیط وہ ملاقات جس میں پاکستان کی ترقی اور خوشحالی کا دورازہ کھلتے کھلتے بند ہو گیا ۔۔۔سہیل وڑائچ کے دنگ کر ڈالنے والے انکشافات

ان کا کہنا تھا کہ شہدا کو مادر وطن کے لئے جانیں دینے پر خراج عقیدت پیش کرتا ہوں،دہشتگردی کیخلاف مسلح افواج کا جذبہ بہادری بے مثال تھا، افواج پاکستان کسی بھی چیلنج کا مقابلہ جذبے کیساتھ کر سکتی ہے.

تفصیلات کے مطابق ریاض میں پاکستانی سفارتخانے میں یوم دفاع و شہدا کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سابق آرمی چیف اورملٹری کاونٹر ٹیررازم کولیشن کے کمانڈر راحیل شریف نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی فاشسٹ راج نے تمام حدود کو عبورکرلیا ہے ،مودی کے زیراقتدار بھارتی فاشسٹ حکومت نے حدیں پارکرلی ہیں.انہوں نے کہا کہ راحیل شریف نے کہا کہ کشمیر تقسیم کا نامکمل ایجنڈا ہے،استحکام کیلئے مسئلہ کشمیر یواین قراردادوں کے تحت حل کرنا ہوگا،

انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کشمیریوں کی انگوں کے مطابق حل کرنا ہوگا. یاد رہے کہ جنرل (ر) راحیل شریف نے کہا کہ جنگ کے دوران جوانوں کا جذبہ اور اُن کی حب الوطنی بے مثال تھی. اُن کا کہنا تھا کہ پاک فوج کو جنگی میدان میں زبردست قابلیت حاصل ہے

جبکہ پاک فوج کسی بھی خطرے اور چیلنج کا جرأت مندی سے مقابلہ کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے.مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی جانب سے ڈھائے جانے والے مظالم اور مسلمانوں کی نسل کُشی پر بات کرتے ہوئے راحیل شریف نے کہا کہ اس معاملے پر عالمی برادری کو فوری اقدامات کرنے کی ضرورت ہے. مقبوضہ کشمیر خطے میں پائیدا ر امن کے قیام اور تقسیم کا ایک نا مکمل ایجنڈا ہے جسے اقوام متحدہ کی قراردادوں اور کشمیری عوام کی خواہش کے مطابق حل ہونا چاہئیے.انہوں نے مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے وزیراعظم عمران خان ، پاک افواج اور پاکستان کی عوام کی کوششوںاور اقدامات کو بھی سراہا.

یاد رہے کہ پاکستان کے سابق آرمی چیف جنرل (ر) راحیل شریف نے 29 نومبر 2016ء کو ریٹائر ہونے کے بعد جنوری 2017ء میں سعودی عرب میں قائم ہونے والے اسلامی اتحاد کی کمان سنبھالی تھی.سعودی عرب نے 2015ء میں دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے 34 اسلامی ممالک کا ایک فوجی اتحاد تشکیل دیا تھا جس میں مصر، قطر اور عرب امارات جیسے کئی عرب ممالک کے ساتھ ساتھ ترکی، ملیشیا اور افریقی ممالک بھی شامل ہیں. رواں برس سعودی عرب میں اسلامی فوجی اتحاد کی سربراہی کرنے والے پاکستان کے سابق آرمی چیف راحیل شریف کی مدت ملازمت میں ایک سال کی توسیع بھی کی گئی تھی.

..

ضرور پڑھیں: بریکنگ نیوز: بالآخر چپ کا روزہ ٹوٹ گیا ۔۔۔۔ جنرل (ر) راحیل شریف نے عمران خان اور مسئلہ کشمیر کے حوالے سے بڑا اعلان کر دیا

Top